تہاڑ جیل میں 28روز سے بھوک ہڑتال پر بیٹھے مشتاق احمد کی حالت خراب

تہاڑ جیل میں 28روز سے بھوک ہڑتال پر بیٹھے مشتاق احمد کی حالت خراب

سری نگر(کے پی آئی)تہاڑ جیل میں قید گذشتہ 28روز سے بھوک ہڑتال پر بیٹھے مشتاق احمد لون ولد عبدالحمید ساکن کنلون بجبہاڑہ کو اسپتال منتقل کیا گیا ہے جہاں اس کی حالت نازک بنی ہے ۔مشتاق احمد کے افراد خانہ نے بتایا کہ جرم بے گناہی کی پاداش میں تہار جیل میں مقید مشتاق احمد لون نے28روز قبل جیل میں بھوک ہڑتال شروع کی اور اس کی حالت بگڑ جانے کے بعد اسے اسپتال لے جایا گیا ہے ۔جہاں اس کی حالت نازک بنی ہوئی ہے ۔مشاق احمد کے والد عبدلحمید نے بتایا کہ اس کے بیٹے کو فرضی کیس میں پھنسا کر تہار جیل پہنچایا گیا جہاں ان کے ساتھ ناروا سلوک کیا جاتا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ 14جون2014کو NIAنے مشتاق احمد کو پولیس اسٹیشن بجبہاڑہ بلایا جہاں سے اسے راجباغ پولیس اسٹیشن پہنچایا گیا اور پھر اگلے روز رہا کیا گیا ۔انہوں نے بتایا کہ بعد میں مشتاق احمد کو پھر بلایا گیا جس دوران گھر پر چھاپہ بھی ڈالا گیا اور تلاشی لی گئی ۔انہوں نے بتایا کہ بعد میں مشتاق احمد کو تہار پہنچایا گیا اور ان پر ایک فرضی کیس دائر کیا گیا کہ اس کے گھر سے ایک ڈائری برآمد ہوئی جس پر کچھ شک آور نمبرات تھے ۔انہوں نے بتایا کہ NIAنے کوئی ڈائری برآمد نہیں کی اور مشتاق احمد پر فرضی کیس دائر کرکے اسے تہار جیل میں بند کردیا ۔

انہوں نے کہا کہ جرم بے گناہی کی پاداش میں تہار جیل میں بھوک ہڑتال شروع کی ہے ۔مشاق احمد کے افراد خانہ نے مانگ کی کہ مشتاق کو سرینگر شفٹ کیا جائے تاکہ انہیں عدالت میں پیش کیا جاسکے اور انہیں انصاف ملے۔

مزید : عالمی منظر