عدالتی ایکشن کے باوجود دودھ کی چیکنگ کا نظام نہ بن سکا،یاسر گیلانی

عدالتی ایکشن کے باوجود دودھ کی چیکنگ کا نظام نہ بن سکا،یاسر گیلانی

لاہور(جنرل رپورٹر) تحریک انصاف کے سینئر رہنما انجینئر یاسر گیلانی نے مضر صحت دودھ کی فروخت سے پیدا ہونے والی بیماریوں پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت عوام کی صحت سے کھلواڑ کرنے والوں کو قابو کرنے میں بُری طرح ناکام ہو گئی ہے کھلا فروخت ہونے والا80فیصد دودھ کیمیکلز والا ہے کہ مْلک میں پیداوار سے 300فیصد زیادہ دودھ مارکیٹ میں آتا ہے اور یہی دودھ،دہی، فالودہ، آئس کریم وغیرہ میں بھی استعمال ہوتا ہے۔دودھ میں ملاوٹ کے حوالے سے سپریم کورٹ نے بھی نوٹس لے رکھا ہے اور حالیہ سماعت کے دوران سرکاری کارکردگی پر برہمی کا بھی اظہار کیا گیا۔

اور ہدایت کی گئی کہ ملکی یا غیر ملکی برانڈ، کھلا یا بند ڈبوں والا، ہر قسم کے دودھ کی درست تحقیق اور پڑتال کر کے رپورٹ پیش کی جائے۔ عدالت عظمیٰ کی واضح ہدایات کے باوجود سرکاری سطح پر دودھ کی جانچ پڑتال کا کوئی نظام ہی وضع نہیں کیا گیا اور نہ ہی ایسے آلات سامنے آئے ہیں، جن سے دودھ کی جانچ کی جا سکے۔یہ صورت حال انتہائی پریشان کن اور تشویشناک ہے یہ دودھ اور دہی بچوں سے بڑوں تک سب استعمال کر رہے ہیں ۔حکومت کو فوری طور پر اِس طرف توجہ دینی چاہئے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...