سابق کویتی رکن پارلیمنٹ کو 11سال قید کی سزا کا نیا حکم

سابق کویتی رکن پارلیمنٹ کو 11سال قید کی سزا کا نیا حکم

کویت سٹی (این این آئی)کویت میں فوجداری عدالت نے سابق رکن پارلیمنٹ عبدالحمید دشتی کے خلاف 11 سال قید میں رکھنے کا ایک نیا حکم جاری کیا ہے۔ یہ حکم مملکت سعودی عرب کو برا بھلا کہنے سے متعلق دو مقدمات کے سلسلے میں جاری کیا گیا ہے۔ اس طرح دشتی کے خلاف مجموعی طور پر 25 برس قید کی سزا کے احکامات جاری ہوچکے ہیں۔اس سے قبل کویتی عدالت نے دشتی کے خلاف 14 برس اور 6 ماہ قید کی سزا کا فیصلہ سنایا تھا جس میں 3 برس قید بامشقت ہے۔یہ فیصلے ابتدائی نوعیت کے ہیں اور دشتی ایک ماہ کے اندر اپیل کر سکتے ہیں۔غیرملکی خبررساں ادرے کے مطابق کویتی پارلیمنٹ ملکی استغاثہ اور وزارت خارجہ کے مطالبے پر کئی الزامات کے تحت رکن پارلیمنٹ دشتی کو حاصل مامونیت ختم کرچکی ہے۔ ان الزامات میں سعودی عرب اور بحرین کے خلاف بیان بازی اور کویتی عدلیہ کو نکتہ چینی کا نشانہ بنانا شامل ہیں۔کویتی استغاثہ کی جانب سے حراست اور پیشی کے احکامات جاری ہونے کے بعد عبدالحمید دشتی گرفتاری کے خوف سے ان دنوں کویت سے باہر ہیں۔کویتی پارلیمنٹ کے ارکان کی ایک بڑی تعداد نے سعودی عرب کے خلاف بیانات دینے پر دشتی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

انہوں نے دشتی پر الزام لگایا کہ وہ خطے میں ایران کے مفادات کے لیے کام کرتے ہوئے بیرونی ایجنڈوں پر عمل درامد کر رہے ہیں۔ مذکورہ ارکان نے حکومت سے مطالبہ کیا تھا کہ دشتی کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے۔

مزید : عالمی منظر


loading...