نواز شریف کو چھوڑ دیا تو سارے کرپٹ افراد بچ جائیں گے: عمران خان

نواز شریف کو چھوڑ دیا تو سارے کرپٹ افراد بچ جائیں گے: عمران خان

کراچی،اسلام آباد( اے این این )پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ کرپشن کے ذریعے پاکستان کا پیسہ لوٹا جا رہا ہے جو ملکی اداروں کی بربادی ہے، پاناما لیکس کے انکشافات کے بعد کوئی شک نہیں رہ گیا ، نواز شریف بچ گئے تو سارے کرپٹ افراد بچ جائیں گے،نوازشریف کے احتساب کیلئے پارلیمنٹ بھی گئے مگرکہیں بھی شنوائی نہیں ہوئی تو احتجاج کے علاوہ ہمارے پاس کوئی اور راستہ باقی نہیں رہا،30 ستمبر کو پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا احتجاج ہو گا۔کراچی ائر پورٹ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ 30ستمبر کو دکھائیں گے تحریک انصاف کتنی بڑی جماعت ہے۔ عمران خان نے کہا کہ لندن میں بیٹھ کر ایک شخص پاکستان میں دہشت گردی پھیلاتا رہا تاہم تحریک انصاف متحدہ پاکستان کی بانی سے علیحدگی کا خیر مقدم کرتی ہے۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہاہے کہ متحدہ قومی موومنٹ پاکستان نے خود کو الطاف حسین سے دورکرلیا لہذا اب ہمارا ایم کیو ایم سے کوئی مسئلہ نہیں اورایم کیو ایم پاکستان کو ویلکم کرتے ہیں جب کہ ہماری بہت سی چیزیں ایم کیوایم سے ملتی ہیں، انہوں نے کہاکہ الطاف حسین نے پاکستان کے خلاف جوزبان استعمال کی اس کے خلاف کراچی کا جلسہ کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سیاسی جماعتیں حکومت میں آنے کے بعد بڑے تاجروں سے اپنے سرگرمیوں کے لیے رقوم لیتی ہیں جبکہ کراچی میں الطاف حسین سرگرمیوں کیلئے بھتہ وصول کرواتے تھے، پوری دنیا میں سیاسی سرگرمیوں کے لیے چندہ جمع کیا جاتا ہے لیکن زبردستی کسی سے پیسے نہیں لیے جاتے۔ قبل ازیں عمران خان نے کارکنوں کے نام اپنے ویڈیو پیغام میں کہا کہ وزیراعظم محمد نوازشریف کرپشن میں پکڑے گئے ہیں اور ان کی آف شور کمپنیوں کا انکشاف بھی ہوچکا ہے،پاکستان اس وقت فیصلہ کن مرحلے سے گزر رہا ہے،تمام ریاستی اداروں سے کہا کہ انصاف فراہم کریں،یہاں تک کہ پارلیمینٹ میں بھی پانامہ لیکس کا معاملہ اٹھایاہے۔انہوں نے کہاکہ برطانوی وزیراعظم نے پانامہ لیکس پر فوری اپنی صفائی دی اور آئس لینڈ کے وزیراعظم کو عوامی دباو پر مستعفی ہونا پڑا،نیب،ایف بی آر اورالیکشن کمیشن نے نوٹس نہیں لیا اور ہمارے پاس صرف احتجاج کا آپشن باقی بچا ہے۔عمران خان نے کہا کہ 30ستمبر کو ملکی تاریخ کا سب سے بڑا احتجاج ہوگا،ریاستی اداروں پر دباؤ ڈال رہے ہیں کہ وہ اپنا کام کریں۔

مزید : صفحہ اول


loading...