تیل دار اجناس کی پیداوار میں اضافہ کی ضرورت ہے، عبدالرشید جان

تیل دار اجناس کی پیداوار میں اضافہ کی ضرورت ہے، عبدالرشید جان

اسلام آباد (اے پی پی) رواں سال 2016ء کے دوران سویابین کی ملکی درآمدات 1.4 ملین ٹن تک بڑھنے کی توقع ہے جبکہ گزشتہ سال 5لاکھ 79 ہزار ٹن سویا بین درآمد کیا گیا تھا۔ پاکستان ایڈایبل آئیل ریفائنرز ایسوسی ایشن کے نائب صدر عبدالرشید جان نے کہا ہے سویا بین اور کینولا کی ملکی درآمدات میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خوردنی تیل کی ملکی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے تیل دار اجناس درآمد کی جاتی ہیں انہوں نے کہا کہ تیل دار اجناس کی درآمدات میں اضافہ سے خوردنی تیل کی درآمدات میں کمی ہو رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ رواں سال 2016ء کے دوران تیل دار اجناس کی ملکی درآمدات 2.3 ملین ٹن تک بڑھنے کا امکان ہے جبکہ گزشتہ سال 2015ء کے دوران پاکستان نے 1.41 ملین ٹن کی مختلف تیل دار اجناس درآمد کی گئی تھیں جبکہ خوردنی تیل کی درآمدات 2.7 ملین ٹن رہی تھیں ۔ انہوں نے کہا کہ خوردنی تیل اور تیل دار اجناس کی درآمدات میں کمی کے لئے تیل دار اجناس کی ملکی پیداوار میں اضافہ کی ضرورت ہے جس کے لئے جامع حکمت عملی کے تحت تیل دار اجناس کے زیر کاشت رقبہ میں اضافہ ‘ زائد پیداوار اور بیماریوں کے خلاف بھر پور مزاحمت کے حامل جدید بیجوں اور زرعی ٹیکنالوجی کے استعمال کے فروغ کی ضرورت ہے۔

جس سے قیمتی زرمبادلہ کی بچت کے ساتھ ساتھ زرعی شعبہ اور بالخصوص بارانی علاقوں کی دیہی معیشت کی ترقی میں مدد حاصل ہوگی۔

مزید : کامرس


loading...