انتہائی شرمناک کام کرنے پر امریکی فوج نے دو جرنیلوں کے خلاف بڑا قدم اٹھا لیا

انتہائی شرمناک کام کرنے پر امریکی فوج نے دو جرنیلوں کے خلاف بڑا قدم اٹھا لیا
انتہائی شرمناک کام کرنے پر امریکی فوج نے دو جرنیلوں کے خلاف بڑا قدم اٹھا لیا

  


نیویارک(نیوزڈیسک)امریکہ میں فوج کے دو اہم ترین جرنیلوں کو مختلف الزامات ثابت ہونے پر عہدوں سے فارغ کردیا گیا ہے، برطرف ہونے والوں میں آرمی نیشنل گارڈ سے تعلق رکھنا والا ایک جنرل بھی شامل ہے جسے جنسی تعلقات رکھنے کی وجہ سے عہدے سے ہاتھ دھونا پڑے۔ڈیلی میل نے حکام کے حوالے سے بتایا ہے کہ امریکی نیشنل گارڈ کے بریگیڈیئر جنرل مائیکل بوبک کو تحقیقات کے دوران جنسی تعلقات ثابت ہونے کے بعد عہدے سے فارغ کیا گیا ہے۔تحقیقات کے دوران ثابت ہوگیا کہ جنرل مائیکل نے امریکی فوجی قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے معاشقہ لڑایا۔فارغ ہونے والے جنرل کے خلاف ایک ایگزیکٹو کمپنی سے تعلقات اورہتھیار فراہم کرنے والی کمپنی کی ملکیت اپارٹمنٹ میں مفت رہائش کا الزام بھی ثابت ہوگیا۔

ہیکروں کا وائٹ ہاﺅس پر حملہ، مشل اوباما کا پاسپورٹ انٹرنیٹ پر شائع کر دیا

رپورٹس کے مطابق کمپنی کے اعلیٰ عہدیدار جوئے فیریریا نے جنرل بابک کو کمپنی کا اپارٹمنٹ فراہم کیا، شبہ ہے کہ دونوں کے درمیان فوج کے خفیہ معاملات پر بھی بات چیت ہوتی رہی ہے تاہم برطرف جنرل کے وکیل نے تمام الزامات کو مسترد کیا ہے جبکہ جوئے فیریریا نے بھی بابک کے 35سالہ دوستی کا دعویٰ کیا ہے۔یو ایس ٹوڈے سے گفتگو میں کمپنی ایگزیکٹو نے موقف اپنایا کہ انہوں نے اسی دوستی کی بنا پر مائیکل کو اپارٹمنٹ دیا تھا، اس اقدام کا کمپنی کے کاروبار سے کوئی تعلق نہیں۔امریکی فوج نے فرسٹ انفینٹری ڈویژن کے کمانڈر میجر جنرل وائن گرائسبے کو بھی عہدے سے فارغ کردیا ہے۔امریکی اخبار”یو ایس اے ٹوڈے“ کے مطابق میجر جنرل وائن کی برطرفی کی تصدیق کی گئی ہے تاہم اس اقدام کی وجہ نہیں بتائی گئی۔یاد رہے کہ امریکی فوج نے گزشتہ ماہ میجر جنرل ڈیوڈ ہائٹ کو بھی جنسی تعلقات اور دوہری شخصیت رکھنے کے الزامات کے تحت گھر بھجوادیا تھا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...