ویمن یونیورسٹی مردان کیلئے 300 کنال اراضی بارے وضاحتی بیان

ویمن یونیورسٹی مردان کیلئے 300 کنال اراضی بارے وضاحتی بیان

پشاور( پاکستان نیوز)محکمہ صحت خیبر پختونخوانے مردان میں باچا خان میڈیکل کالج کے قیام کیلئے مختص زمین ویمن یونیورسٹی مردان کو دینے سے متعلق میڈیا میں چلنے والی رپورٹس کی وضاحت کرتے ہوئے بتایا ہے کہ مالی سال 2010-11کے دوران مردان میں محکمہ صحت کے تحت طبی سہولیات کے منصوبوں کیلئے مجموعی طور پر 1000(ایک ہزار) کنال زمین خریدنے کی منظوری دے دی گئی تھی جسے مالی سال 2011-12کے دوران خریدا گیا تھا۔ محکمہ صحت سے جاری ہونے والے وضاحتی بیان میں طبی سہولیات کے اُن منصوبوں اور اُن کیلئے مختص قطعہ اراضی سے متعلق تفصیل فراہم کرتے ہوئے بتایا گیا کہ مذکورہ1000کنال اراضی میں سے 200کنال اراضی ڈینٹل کالج اینڈ ہسپتال ، 100کنال سپورٹس کمپلکس، 80کنال انسٹیٹیوٹ آف ہربل میڈیسن، 100کنال خیبر میڈیکل یونیورسٹی کیمپس، 100کنال پوسٹ گریجویٹ میڈیکل انسٹیٹیوٹ جبکہ 400کنال عملے کیلئے رہائشی گھروں اور دیگر سہولیات کے مجوزہ منصوبوں کیلئے مختص کیا گیا تھا۔بیان میں مزید بتایا گیا ہے کہ بعد ازاں محکمہ اعلیٰ تعلیم کی طرف سے مردان ویمن یونیورسٹی کے قیام کیلئے مذکورہ بالا 1000کنال کی اراضی سے 300کنال فراہم کرنے کی درخواست ایک سمری کی صورت میں موصول ہو ئی ۔محکمہ صحت نے خواتین کی تعلیم کی اہمیت کو مدنظر رکھتے ہوئے 300کنال زمین جس کا میڈیکل کالج کی سہولیات کے ساتھ تعلق نہیں تھا اس شرط پردینے کی تجویز دی کہ یہ قطعہ اراضی کُل اراضی کے ایک کونے میں ہو گی، تاکہ باقی ماندہ 700کنال اراضی باچا خان میڈیکل کالج کے قیام کیلئے درکار منصوبوں کیلئے رہ جائے جس کے بعد وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا نے تمام متعلقہ محکموں کا ایک اجلاس بلا کر وسیع تر عوامی مفاد میں 300کنال اراضی محکمہ اعلیٰ تعلیم کو منتقل کرنے کی منظور ی دے دی۔واضح رہے کہ ویمن یونیورسٹی مردان کے منصوبے کیلئے دی گئی 300کنال اراضی باچا خان میڈیکل کالج کے قیام کیلئے درکار طبی اداروں کے منصوبوں کیلئے مختض زمین میں شامل نہیں ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...