گنے کے کاشتکاروں کے واجبات کی ادائیگی میں تاخیر پر 3 سال قید اور50 لاکھ روپے جرمانہ ہوگا، پنجاب حکومت نے ترمیمی آرڈیننس جاری کردیا

گنے کے کاشتکاروں کے واجبات کی ادائیگی میں تاخیر پر 3 سال قید اور50 لاکھ روپے ...
گنے کے کاشتکاروں کے واجبات کی ادائیگی میں تاخیر پر 3 سال قید اور50 لاکھ روپے جرمانہ ہوگا، پنجاب حکومت نے ترمیمی آرڈیننس جاری کردیا

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پنجاب حکومت نے شوگر فیکٹریز(کنٹرول)ترمیمی آرڈیننس 2020 جاری کردیا،گنے کے کاشتکاروں کے واجبات کی ادائیگی میں تاخیر پر 3 سال قید اور50 لاکھ روپے جرمانہ ہوگا،وزن اور ادائیگی میں غیرقانونی کٹوتی پر بھی 3 سال قید اور 50 لاکھ جرمانہ کی سزا ہوگی ۔

نجی ٹی وی جی این این کے مطابق پنجاب حکومت نے شوگر فیکٹریز(کنٹرول)ترمیمی آرڈیننس 2020 جاری کردیا،آرڈیننس کے ذریعے پنجاب شوگر فیکٹریز(کنٹرول)ایکٹ1950 میں بنیادی تبدیلیاں کی گئی ہیں، گنے کے کاشتکاروں کے واجبات کی ادائیگی میں تاخیر پر 3 سال قید اور50 لاکھ روپے جرمانہ ہوگا،وزن اور ادائیگی میں غیرقانونی کٹوتی پر بھی 3 سال قید اور 50 لاکھ جرمانہ کی سزا ہوگی ۔

آرڈیننس کے مطابق شوگرمل گنے کی وصولی کی باضابطہ رسید جاری کرنے کی پابند ہو گی ،شوگر ملز کی جانب سے کسانوں کو کچی رسید جاری کرنا جرم ہو گا ۔

مزید :

قومی -علاقائی -پنجاب -لاہور -