میں اس کی آنکھوں سے چھلکی شراب پیتا ہوں  | حسرت جے پوری |

میں اس کی آنکھوں سے چھلکی شراب پیتا ہوں  | حسرت جے پوری |
میں اس کی آنکھوں سے چھلکی شراب پیتا ہوں  | حسرت جے پوری |

  

میں اس کی آنکھوں سے چھلکی شراب پیتا ہوں 

غریب ہو کے بھی مہنگی شراب پیتا ہوں 

مجھے نشے میں بہکتے کبھی نہیں دیکھا 

وہ جانتا ہے میں کتنی شراب پیتا ہوں 

اسے بھی دیکھوں تو پہچاننے میں دیر لگے 

کبھی کبھی تو میں اتنی شراب پیتا ہوں 

پرانے چاہنے والوں کی یاد آنے لگے 

اسی لئے میں پرانی شراب پیتا ہوں 

شاعر: حسرت جے پوری

Main   Uss   Ki   Aankhon   Say   Chhalki   Sharaab   Peeta   Hun

Ghareeb   Ho   K   Bhi   Mehngi   Sharaab   Peeta   Hun

Mujhay   Nashay   Men   Bahektay   Kabhi   Nahern   Dekha

Wo   Jaanta   Hay   Main   Kitni   Sharaab   Peeta   Hun

Usay   Bhi   Dekhun   To   Pechaannay   Men   Der   Lagay

Kabhi   Kabhi   To   Main   Itni   Sharaab   Peeta   Hun

Puraanay   Chaahnay   Waalon   Ki   Yaad   Aanay   Lagay

Isi   Liay   Main   Puraani    Sharaab   Peeta   Hun

Poet: Hasrat    Jaipuri

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -