جب پیار نہیں ہے تو بھلا کیوں نہیں دیتے  |حسرت جے پوری |

جب پیار نہیں ہے تو بھلا کیوں نہیں دیتے  |حسرت جے پوری |
جب پیار نہیں ہے تو بھلا کیوں نہیں دیتے  |حسرت جے پوری |

  

جب پیار نہیں ہے تو بھلا کیوں نہیں دیتے 

خط کس لئے رکھے ہیں جلا کیوں نہیں دیتے

کس واسطے لکھا ہے ہتھیلی پہ مرا نام 

میں حرف غلط ہوں تو مٹا کیوں نہیں دیتے 

للٰلہ شب و روز کی الجھن سے نکالو 

تم میرے نہیں ہو تو بتا کیوں نہیں دیتے 

رہ رہ کے نہ تڑپاؤ اے بے درد مسیحا 

ہاتھوں سے مجھے زہر پلا کیوں نہیں دیتے 

جب اس کی وفاؤں پہ یقیں تم کو نہیں ہے 

حسرتؔ کو نگاہوں سے گرا کیوں نہیں دیتے 

شاعر: حسرت جے پوری

Jab   Payaar   Nahen   Hay   To   Bhula    Kiun    Nahen   Detay

Khat   Kiss   Liay   Rakhay   Hern   Jalaa   Kiun    Nahen   Detay

Kiss   Waastay   Likha    Hay    Hatheli   Pe    Mera   Naam

Main   Harf-e- Ghalat    Hun   To   Mitaa   Kiun    Nahen   Detay

Lillah   Shab-o-Roz   Ki   Uljhan   Say   Nikaalo

Tum   Meray    Nahen   Ho  To   Bataa   Kiun    Nahen   Detay

Reh   Reh   K   Na   Tarrpaao    Ay   Be   Dard   Maseeha

Haathon   Say    Mujhay    Zehr   Pilaa   Kiun    Nahen   Detay

Jab   Iss   Ki   Wafaaon     Pe    Yaqeen   Tum   Ko   Nahen   Hay

HASRAT   Ko   Nigaahon   Say   Giraa   Kiun    Nahen   Detay

Poet: Hasrat    Jaipuri

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -