محسود ضلع کے صدر مقام کیلئے محسود قوم سے مشاورت ناگزیر ہے: سینیٹر دوست محمد خان 

محسود ضلع کے صدر مقام کیلئے محسود قوم سے مشاورت ناگزیر ہے: سینیٹر دوست محمد ...

  

 ٹانک(نمائندہ خصوصی)عمران خان کا دورہ ڈیرہ اسماعیل اور جنوبی وازیرستان میں دو اضلاع کے قیام کے حوالے  سے میری بنیادی تجاویز پر عمل درآمد کی یقین دہانی کے حوالے سے ان کا مشکور ہوں۔سنیٹر دوست محمد خان محسود ماما جنوبی وزیرستان سے تعلق رکھنے والے حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف کے سینٹر دوست محمد ماما نے میڈیا کو جاری کیئے گئے بیان میں کہا ہے کہ وزیراعظم پاکستان عمران خان کے دورہ ڈیرہ اسماعیل کے دوران جنوبی وازیرستان کو دو اضلاع میں تقسیم کرنے اور اس حوالے سے میرے تجاویز اور نقاط پر وزیر اعلی خیبر پختونخواہ محمود خان کو خصوصی ہدایات دینے پر ان کا بے حد مشکور ہوں۔ سینٹر دوست محمد ماما کا کہنا تھا کہ اسلام آباد سے ڈیرہ اسماعیل خان ھیلی کاپٹر سفر کے دوران میں نے یہ بات خان صاحب کے سامنے رکھی کہ اضلاع کی قیام سے پہلے محسود اور وزیر اقوام کے بونڈریز معلوم کرنا اور ان پر پابہ موجود تنازعات کا حل پہلے ہونا ضروری ہے۔ ورنہ اضلاع کیلئے حدود کی تقسیم پر مسائل ہونگے۔ اسی طرح محسود ضلع کے صدر مقام کیلئے  محسود قوم سے مشاورت کرنی ہوگی اور قوم جو علاقہ صدر مقام کیلئے منتخب کریں وہی قابل قبول ہوگا۔ اسی طرح تیسرا اہم پوائنٹ یہ بتایا کہ جنوبی وزیرستان میں چار اقوام رہتے ہیں سیلمان خیل، دوتانی، وزیر اور محسود ہیں۔ محسود اکثریت میں ہیں  اس تقسیم کے حوالے سے اور حدود بندی کے حوالے سے تمام اقوام سے رائے لینا ضروری ہوگی کیونکہ جنوبی وازیرستان میں محسود اور باقی اقوام  کا تناسب ون، تھرڈ ہیں۔  اگر ان چیزوں کو مدنظر نہیں رکھا گیا تو جغرافیہ اور ابادی کی تناسب و حدود بندی و وسائل کی تقسیم پر تنازعات کا ہونا اٹل حقیقت ہے، ماما کے مطابق عمران خان نے ان تجاویز کو پسند فرمایا اور اضلاع کی تقسیمی عمل سے پہلے محمود خان کو ان تجاویز  پر عمل درامد کا کہا جس پر میں جناب وزیر اعظم عمران خان کا مشکور ہوں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -