مظفر گڑھ:وزیر ستان آپریشن میں شہید جوان کی نماز جنازہ ادا

مظفر گڑھ:وزیر ستان آپریشن میں شہید جوان کی نماز جنازہ ادا

  

مظفرگڑھ،کرم دادقریشی(نیوز رپورٹر،نامہ نگار)  وزیرستان آپریشن میں شہید ہونے نوجوان محمد شفیق آلمانی کا تعلق غاڑیگھاٹ کے موضع چن والا بستی آلمانی سے تھا۔ ابتدائی تعلیم مڈل تک مقامی سکول چن والا میں حاصل کی۔ میٹرک کی تعلیم ہائی سکول غاڑیگھاٹ میں (بقیہ نمبر31صفحہ5پر)

حاصل کرکے  2002 میں پاک آرمی میں بطور سپاہی بھرتی ہوئے۔ اس دوران دو مرتبہ باجوڑ کرم ایجنسی میں آپریشن میں دشمن سے دلیرانہ مقابلہ کرچکے ہیں۔  وزیرستان آپریشن میں شہید ہونے سے چند روز قبل نائب صوبیدار کا نوٹیفکیشن جاری ہوچکا تھا۔  چوکی پر بزدل دشمن کے حملہ میں 41 سال 5 ماہ کی عمر میں جام شہادت نوش فرمائی۔گزشتہ  صبح 6 بجے برگیڈیئر و دیگر فوجی جوان  ہمراہ ایلیٹ فورس   شہید محمد شفیق آلمانی کے جسد خاکی کو ان کے آبائی گھر بستی آلمانی لائے۔ جہاں ڈی پی او مظفرگڑھ محمد حسن اقبال ودیگر پولیس افسران ایس ایچ او تھانہ کرمدادقریشی محمد نواز لنڈ نفری کے ہمراہ موجود تھے۔ 9 بجے صبح امن جوک غاڑیگھاٹ میں نماز جنازہ ادا کیا گیا۔ نماز جنازہ میں ڈی پی او مظفرگڑھ،  آرمی برگیڈیئر دیگر فوجی جوانون،  ایلیٹ فورس کے علاہ سیاسی شخصیات سمیت ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ شہید محمد شفیق آلمانی کو پورے فوجی اعزاز کے ساتھ مقامی قبرستان بستی آلمانی میں سپردِ خاک کیا گیا۔ آخر میں پاک آرمی کے جوانوں کے دستے نے سلامی پیش کی۔ بریگیڈ و دیگر فوجی جوانوں نے شہید کے والد، بیٹوں سمیت وارثانِ سے ملاقات اور تعزیت کی،  شہید محمد شفیق آلمانی نے سوگواران میں ایک بیوہ، دو بیٹے اور چار بیٹیاں چھوڑی۔ یاد رہے کہ  شہید محمد شفیق آلمانی کے بوڑھے والدین بھی زندہ ہیں۔ والد محمد شفیع المانی نے مختصر گفتگو کرتے  ہوئے کہا کہ مجھے فخر ہے کہ میرے بیٹے نے ملک و قوم کی بقا کیلئے جان کا نذرانہ پیش کرکے جام شہادت نوش کی۔  شہادت اس خواہش تھی جو سروس کے آخری دنوں میں پوری ہوگئی۔

سپرد خاک

مزید :

ملتان صفحہ آخر -