کیا لڑکی سسرال میں تشدد کا نشانہ بن رہی ہے؟ ایسی علامات جن سے والدین فوری پتہ چلا سکتے ہیں

کیا لڑکی سسرال میں تشدد کا نشانہ بن رہی ہے؟ ایسی علامات جن سے والدین فوری پتہ ...
کیا لڑکی سسرال میں تشدد کا نشانہ بن رہی ہے؟ ایسی علامات جن سے والدین فوری پتہ چلا سکتے ہیں

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) خواتین کے ساتھ ان کے شوہر ناروا سلوک بھی کر رہے ہوں اور انہیں تشدد کا نشانہ بنا رہے ہوں تو گاہے وہ پھر بھی گھر بچانے کی خاطر چپ سادھے رہتی ہیں اور اپنے ماں باپ کو اپنے ساتھ ہونے والے برے سلوک سے آگاہ نہیں کرتیں۔ اب ماہرین نے کچھ ایسی علامات بتا دی ہیں جو خواتین میں دیکھ کر ماں باپ اور دیگر عزیز و اقارب پتا چلا سکتے ہیں کہ ان کا شوہر ان کے ساتھ ناروا سلوک کر رہا ہے اور وہ اپنے ازدواجی رشتے میں شدید تکلیف سے دوچار ہیں۔

 دی سن کے مطابق ریلیشن شپ ماہرین سونیا شیوارز، ایملی مینڈیز اورجیسیکا بیئرنے بتایا ہے کہ جس خاتون کے ساتھ اس کا شوہر یا بوائے فرینڈ ناروا سلوک روا رکھے ہوئے ہو اور اسے تشدد کا نشانہ بناتا ہو، اس کے طرز زندگی میں کڑی تبدیلیاں رونما ہونے لگتی ہیں۔ وہ کس طرح لباس زیب تن کرتی ہے، بال کس انداز میں بتاتی ہے اور میک اپ کس طرح کا کرتی ہے، یہ سب کچھ تبدیل ہونا شروع ہو جائے گا۔ خواتین کی یہ تبدیلیاں لاشعوری طور پر اپنے شوہر یا بوائے فرینڈ کو خوش کرنے کے لیے ہوتی ہیں اور عام طور پر اس وقت یہ تبدیلیاں آتی ہیں جب خواتین اپنے رشتے کو غیرمحفوظ خیال کرنے لگیں۔

ماہرین کا کہنا تھا کہ ایسی خواتین اپنے دیگر عزیزواقارب سے فاصلہ رکھنے لگتی ہیں، حد سے زیادہ جذباتی ہو جاتی ہیں، بات بے بات ہر الزام خود پر لینے لگتی ہیں، ہمہ وقت ہر کسی کو خوش رکھنے کی کوشش کرنے لگتی ہیں، مردوں کے استحصالی روئیے گھٹا کر بیان کرنا شروع کر دیتی ہیں، اس موضوع پر بات کرتے ہوئے ان کے چہرے پر خوف نمایاں ہوتا ہے، یہ خوف ان کے پارٹنر کا ہوتا ہے کہ اگر اسے یہ باتیں پتا چل گئیں تو پھر کیا ہو گا۔ایسی خواتین اپنی سہیلیوں اور رشتہ داروں کے ساتھ ازدواجی تعلق کے بارے میں طویل گفتگو اور گہری گفتگو سے گریز کرنے لگتی ہیں اور اگر اس پر بات کریں تو ان کے روئیے سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ وہ کچھ چھپانے کی کوشش کر رہی ہیں۔

ماہرین کا کہنا تھا کہ رشتہ دار اور دوست اگر اپنی کسی عزیز خاتون میں یہ علامات دیکھیں تو انہیں ان کے ساتھ اکیلے میں ملنے اور ان کے دل کا حال معلوم کرنے کی سعی کرنی چاہیے۔ انہیں یقین دلانا چاہیے کہ آپ ان کے ساتھ ہیں اور ان کے تحفظ کو یقینی بنائیں گے۔ جب آپ انہیں اپنی مدد کا یقین دلائیں گے تو وہ یقینا آپ کے ساتھ دل کی بات شیئر کر دیں گی۔ اس کے بعد آپ کو چاہیے کہ انہیں محفوظ گھر میں منتقل کریں، انہیں رقم کی ضرورت ہو تو اس کا انتظام کریں اور ان کی ہر طرح سے دیکھ بھال کریں، جب تک وہ اپنے پاﺅں پر کھڑی نہ ہو جائیں، آپ ان کے ساتھ کھڑے رہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -