1983ءسے بیت اللہ کی صفائی کرنے والا خوش نصیب پاکستانی، اس کی کہانی جان کر آپ بھی قسمت پر رشک کریں گے

1983ءسے بیت اللہ کی صفائی کرنے والا خوش نصیب پاکستانی، اس کی کہانی جان کر آپ ...
1983ءسے بیت اللہ کی صفائی کرنے والا خوش نصیب پاکستانی، اس کی کہانی جان کر آپ بھی قسمت پر رشک کریں گے

  

مکہ المکرمہ(مانیٹرنگ ڈیسک) بیت اللہ کی زیارت ہر مسلمان کا خواب ہے مگر کچھ خوش قسمت ہی اس خواب کی تعبیر دیکھ پاتے ہیں۔ آج ہم آپ کو ایک ایسے پاکستانی سے ملوانے جا رہے ہیں جس کی قسمت پر ہر مسلمان رشک کرے گا۔ عرب نیوز کے مطابق یہ 61سالہ احمد خان قندل ہیں جو 1983ءمیں منڈی بہاﺅالدین سے مکہ المکرمہ گئے اور تب سے مسجد الحرام میں صفائی ستھرائی کا کام کر رہے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق احمد خان کی عمر اس وقت 23سال تھی جب وہ اپنے ماں باپ سے جلد لوٹ آنے کا وعدہ کرکے سعودی عرب روانہ ہوئے مگر آج انہیں چار دہائیاں ہونے کو ہیں اور وہ واپس نہیں آئے۔ ان کے والدین بھی اب اس دنیا سے رخصت ہو چکے ہیں۔احمد خان کا کہنا ہے کہ مسجد الحرام کی صفائی کے کام میں ان کا ایسا دل لگا کہ ان کی واپس جانے کی خواہش ہی ختم ہو گئی۔

 عرب نیوز سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ”میں جب سے یہاں آیا ہوں، ایسے ہی ہے جیسے میں اپنے خاندان میں رہ رہا ہوں۔ مجھے کبھی ایسا محسوس نہیں ہوا کہ میں کسی اجنبی جگہ پر ہوں۔ جب بھی کوئی نیا آدمی مجھے ملتا ہے، وہ بتاتا ہے کہ میں کتنا خوش قسمت ہوں۔“ احمد خان اس وقت مسجد الحرام میں سینی ٹیشن ورک میں سپروائزر کے طور پر کام کر رہے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -عرب دنیا -