پی سی بی نے وقار یونس کی قومی ٹیم کی دوبارہ کوچنگ کیلئے تمام شرائط تسلیم کر لیں

پی سی بی نے وقار یونس کی قومی ٹیم کی دوبارہ کوچنگ کیلئے تمام شرائط تسلیم کر ...

                     لاہور(آئی اےن پی)پاکستان کرکٹ بورڈ کی انتظامی کمیٹی نے سابق کپتان اور کوچ وقاریونس کی قومی ٹیم کی دوبارہ کوچنگ کیلئے تمام شرائط تسلیم کرلیں۔پی سی بی کے ذرائع کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ کی انتظامی کمیٹی نے سابق کپتان اور کوچ وقاریونس کی قومی ٹیم کی دوبارہ کوچنگ کیلئے تمام شرائط تسلیم کرلی ہیں۔وقاریونس کو قومی ٹیم کا دوبارہ ہیڈکوچ بنانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔پی سی بی کی کوچنگ کمیٹی کے رکن ،چیف سلیکٹر اور ٹیم منیجر معین خان نے سابق کپتان وقاریونس کو ٹیلی فون کیا اور ان سے قومی ٹیم کے امور بالخصوص ان کی کوچنگ اسائنمنٹ اور سلیکشن کمیٹی کے حوالے سے بات چیت کی گئی ۔معین خان نے وقاریونس کی تمام شرائط کو تسلیم کرلیا ہے ۔وقاریونس آئندہ ماہ کے اوائل میں دبئی سے لاہور پہنچیں گے اور پی سی بی کی انتظامی کمیٹی کے چیئرمین نجم سیٹھی سے ملاقات کریں گے جس میں انہیں قومی ٹیم کا ہیڈکوچ بنانے کا باضابطہ اعلان کیا جائے گا۔سابق کپتان انضمام الحق بیٹنگ کنسلٹنٹ جبکہ مشتاق احمد سپن باﺅلنگ کنسلٹنٹ ہوں گے ۔بورڈ تاحال فیلڈنگ کوچ اور ٹرینر کی تلاش میں ہے جو یقینا غیر ملکی ہوگا۔پاکستان کرکٹ ٹےم کے سابق کپتان وکوچ وقاریونس نے کہا ہے کہ ہیڈکوچ کی تقرری بورڈ کا کام ہے، ذمہ داری سونپی گئی تو ٹےم کو نئی بلندیوں پر لے جانے کیلئے تمام تر توانائیاں بروئے کارلاﺅں گا،ورلڈ کپ میں بڑی کامیابی کا دعویٰ نہیں کرونگا۔ معین خان کے ساتھ انہیں کام کرنے میں کوئی دشواری پیش نہیں آئے گی کیونکہ ماضی میں ہم ایک ساتھ اکٹھے کھیلتے رہے ہیں اور ہماری اچھی ہم آہنگی رہی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ بھارتی ریاست بنگال کے ساتھ ان کا تین سالہ معاہدہ ہے۔ مگر اس سے پاکستانی ٹیم کے ساتھ وابستہ ہونے میں کوئی مشکل پیش نہیں آئے گی۔ سابق کپتان وکوچ نے کہا کہ ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں جو ہونا تھا وہ ہو چکا اب ماضی کی جانب دیکھنے کے بجائے مستقبل میں بہتری کی حکمت عملی تیار کرنی چاہئے۔ ایک سوال کے جواب میں وقاریونس نے کہاکہ نوجوان کھلاڑی ہی پاکستان کرکٹ کا مستقبل ہیں لیکن تجربے کا کوئی نعم البدل نہیں ،ماضی میں سینئر کھلاڑیوں سے تعلقات میں کشیدگی افواہیں تھیں،شاہد آفریدی سے ہونے والا معاملہ غلط فہمی کی بناءپر ہوا جو بعد میں حل ہوگیا تھا۔

مزید : میٹروپولیٹن 3


loading...