ملک کو امن کا گہوارہ بنانے کیلئے حکومت کے ہر اقدام کا ساتھ دینگے،پیپلز پارٹی

ملک کو امن کا گہوارہ بنانے کیلئے حکومت کے ہر اقدام کا ساتھ دینگے،پیپلز پارٹی

لاہور( سپیشل رپورٹر) پاکستان پیپلز پارٹی نے قرار دیا ہے کہ طالبان کے ساتھ مذاکرت کرنے ےا پھر آپریشن کرنے کے بارے میں ہم نے حکومت کی طلب کردہ اے پی سی میں حکومت کو مینڈیٹ دیدیا تھا پیپلز پارٹی ہر قیمت پر ملک میں امن چاہتی ہے اب ےہ فیصلہ حکومت نے کرنا ہے کہ اس نے کیا کرنا ہے لیکن ہم ہر ایشو پر حکومت کے ساتھ ہیں کیونکہ ہم پاکستان کو امن کا گہوارہ بنانے کے لئے حکومت کے ہر اقدام کا ساتھ دیں گے تاہم حکومت کو ےہ بھی دیکھنا ہو گا کہ ابھی تک حکومت کے طالبان کے ساتھ مذاکرت کے مثبت نتائج برآمد ہونا شروع نہیں ہوئے ہیں حکومت نے طالبان کے قیدی تو چھوڑ دئیے ہیں لیکن طالبان کے پاس ہمارے جو غیر عسکری قیدی ہیں وہ انہوں نے رہا نہیں کئے ہیں اور دوسری جانب ملک میں دہشت گردی کے واقعات بھی تسلسل کے ساتھ ہو رہے ہیں حکومت کو موجودہ حالات کو سامنے رکھ کر ایک مرتبہ پھر پیپلز پارٹی سمیت ملک کی تمام بڑی سیاسی جماعتوں کو اعتماد میں لینا چاہئے ۔ان خیالات کا اظہار سینٹر رحمان ملک ‘ سابق گورنر لطیف کھوسہ ‘ منظور وٹو ‘ ترجمان پیپلز پارٹی راجہ عامر خاں اور عابد صدیقی نے ’پاکستان‘ کے ساتھ ٹیلی فونک گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی اپوزیشن جماعت ہونے کے باوجود ملک میں ہر قیمت پر امن قائم کرنے کے لئے حکومت کے ساتھ کھڑی ہے ہم چاہتے ہیں کہ حکومت خود فیصلہ کرلے کہ اس نے موجودہ حالات میں کیا فیصلہ کرنا ہے کیونکہ ہم ےہ سمجھتے ہیں کہ ایک طرف دہشت گردی ہے تو دوسری طرف مذاکرت ہو رہے ہیں دونوں کام ایک ساتھ نہیں چل سکتے حکومت اگر بات چیت کررہی ہے تو جو دوسری جانب ملک میں جو دہشت گردی ہو رہی ہے اس کو روکنے کے لئے بھی کوئی عملی اقدام کرے دونوں ایشو ایک ساتھ نہیں چل سکتے ۔انہوں نے کہا کہ ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ عوام کے جان و مال کے تحفظ کو ےقینی بنانے کے لئے ایک مرتبہ پھر ملکی دہشت گردی کی لہر کو سامنے رکھ کر پیپلز پارٹی سمیت تمام جماعتوں کو اعتماد میںلے اور تمام جماعتوں کی مشاورت سے ایک نئی حکمت عملی بنائیں اور ہماری رائے تو ےہی ہے کہ فوری طور پر دہشت گردوں کے خلاف کاروائی شروع کی جائے ۔

وٹو

مزید : صفحہ آخر


loading...