قائم مقام ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کی تقرری کےخلاف دائر درخواست کی سماعت 9 مئی تک ملتوی

قائم مقام ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کی تقرری کےخلاف دائر درخواست کی سماعت 9 مئی تک ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے قائم مقام ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کی تقرری کے خلاف دائر درخواست کی مزید سماعت 9 مئی تک ملتوی کرتے ہوئے فریقین کے وکلاءکو تفصیلی بحث کے لئے طلب کر لیا۔ عدالت کے روبرو درخواست گزار نوشاب اے خان ایڈووکیٹ نے بطور قائم مقام ایڈ ووکیٹ جنرل مصطفےٰ رمدے کی اہلیت کو چیلنج کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ مصطفےٰ رمدے کی عمر39 سال ہے جبکہ اس عہدے کے لئے عمر کی حد 45 سال مقررہے۔ چیئرمین نیب کی تقرری کے حوالے سے سپریم کورٹ نے یہ ا±صول طے کیا ہے کہ جہاں قانونی عہدہ خالی ہو وہاں اس خا لی عہدے پر قائم مقام کی تقرری نہیں کی جا سکتی۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ آئین کے آرٹیکل 140 اور 193کی رو سے جو قابلیت ہائیکورٹ کے جج کے لیئے ہے وہی قابلیت ایڈووکیٹ جنرل کے لئے ہے۔ لہذا مصطفےٰ رمدے کی قائم مقام ایڈووکیٹ جنرل کے طور پر کام نہیں کرسکتے تقرری کالعدم قرار دی جائے۔دوران سماعت مصطفےٰ رمدے کے وکیل مخدوم علی خان ایڈووکیٹ نے اپنا جواب داخل کرایا۔ جس پر عدالت نے کیس کی مزید سماعت 9مئی تک ملتوی کرتے ہوئے فریقین کے وکلاءکو تفصیلی بحث کے لئے طلب کر لیا۔

ملتوی

مزید : صفحہ آخر


loading...