ایک پھول دو مالی، ایک عورت کے دوشوہر

ایک پھول دو مالی، ایک عورت کے دوشوہر
ایک پھول دو مالی، ایک عورت کے دوشوہر

  


چنیوٹ (مانیٹرنگ ڈیسک) آپ نے ایک پھول دو مالی والا محاورہ تو سنا ہوگا، اسی طرح کا کچھ معاملہ اس وقت بھوآنہ شہر کی کچہری میں دیکھنے میں آیا جب ایک خاتون کے دو شوہر ہونے کے دعویدار ہونے والے سامنے آگئے۔عدالت میں خاتون کو نکاح پر نکاح کے الزام میں پیش کیا گیا تو عدالت نے اس کی گرفتاری کا حکم دیدیا لیکن اس موقع پر خاتون کے وکیل نے گرفتاری سے روکتے ہوئے عدالت سے استدعا کی کہ لڑکی کو اس کی مرضی کے مطابق جانے کی اجازت دی جائے۔تفصیلات کے مطابق تحصیل کچری بھوآنہ میں اس وقت دلچسپ صورت حال پیدا ہوگئی جب گھر سے بھاگی ہوئی شادی شدہ خاتون کو عدالت نے 496/380 کے ایک مقدمہ میں گرفتار کرنے کے آڈرز دئیے تو خاتون کے وکیل مہر محمد اشفاق جپہ نے خاتون کو اپنے چیمبر میں پناہ دے دی جبکہ پولیس سب انسپکٹر تھانہ لنگرانہ محمد اقبال جو خاتون کو دارالاامان فیصل آباد سے لایا تھا وہ اس بات پر مصر تھا کہ وہ اس کو واپس پہنچائے گا مگر وکلائنے اپنے ساتھی کا ساتھ دیتے ہوئے سب انسپکٹر کو خاتون صابراں بی بی کو گرفتار کرنے نہیں دیا۔بعد ازاں وکیل مہر اشفاق جپہ نے اسی عدالت سے ایک حکم نامہ حاسل کیا جس میں معزز عدالت نے خاتون کے بیان پر اس کو اپنی مرضی سے جانے کی اجازت دے دی۔ مگر یہ معاملہ اس وقت مزید پیچیدہ ہوگیا جب خاتون صابراں بی بی کا پہلا شوہر امان اللہ اپنے دیگر ساتھیوں کے ساتھ باہر موجود تھا جبکہ چیمبر کے اندر دوسرا شوہر جس کے ساتھ صابراں بی بی جانا چاہتی تھی اس کے ساتھ موجود تھا دونوں جانب سے دائر کئے جانے والے کیسوں کے مطابق امان اللہ نامی نوجوان نے بتایا کہ اس کی شادی آج سے دو سال قبل صابراں بی بی کے ساتھ ہوئی جس کی تصاویر اور مودی بھی موجود ہے مگر کچھ عرصہ قبل خلیل احمد رجوکہ نامی شخص نے اس کی بیوی کو اغواء کرلیا جس کا مقدمہ تھانہ لنگرانہ میں درج ہے 486/380 جرم کے تحت جب کہ دوسری جانب خلیل احمد کے وکیل مہر اشفاق جپہ کے مطابق اس کی موکلا کا نکاح خلیل احمد کے ساتھ 06-12-2002میں ہوا تھا مگر نکاح نامے کی رو سے یہ بات ٹھیک لگتی ہے مگر ایک بات الجھا دینے والی ہے کہ اگر صابراں بی بی نے خلیل احمد سے نکاح 2002ء میں کیا تھا تو اس کے نکاح نامے پر اس کی اس وقت عمر 20 سال کیسے لکھی گئی اور دلہا خلیل احمد کی عمر 27 سال جب اب بھی صابراں بی بی کی عمر24 سال اور خلیل احمد کی 25 یا اس کے قریب ہوگی تو کیا اس وقت صابراں بی بی 8 سال کی تھی تو اس کا نکاح کیسے ہوگیا؟ اگر وہ بات جھوٹ ہے تو پھر صابراں بی بی کو اب 34 سال اور خلیل کو 39 سال کا ہونا چاہیے۔ صابراں بی بی کا شوہر کون ہے اس کا فیصلہ تو عدالت نے کرنا ہے مگر صابراں بی بی نے اپنا فیصلہ خلیل احمد کے حق میں دے کر یہ بتادیا ہے کہ میں خلیل کے ساتھ خوش رہ سکتی ہوں، رہی بات نکاح پر نکاح کی تو یہ بات تفتیش میں پتا چلے گی جو کہ صابراں بی بی کے پیش نہ ہونے کی وجہ سے درمیان میں لٹکی ہوئی ہے تاحال تصادم کا خطرہ موجود تھا دونوں جانب کے لوگ مورچہ بند کھڑے تھے ایک لے جانے کے لئے دوسرا اس کو روکنے کے لئے صابراں بی بی کو کون لے جانے میں کامیاب ہوا اس کا پتہ اس کے نکلنے کے بعد ہی چلے گا۔

مزید : فیصل آباد


loading...