فلسطینیوں کی زندگی مزید سستی

فلسطینیوں کی زندگی مزید سستی
فلسطینیوں کی زندگی مزید سستی

  


غزہ (نیوزڈیسک) اسرائیکل کے فلسطین پر مظالم کی صورتحال یہ ہوچکی ہے کہ مظلوم فلسطینیوں کی زندگی محض ایک لکیر کے پار جانے سے ختم ہوسکتی ہے۔ ”ہیومن رائٹس واچ“ اس ظلم کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل کو محض ایک لکیر کے پار جانے پر نہتے فلسطینیوں پر گولیاں برسانا بند کرنا چاہیے۔ اس سال کے آغاز سے لے کر اب تک اسرائیلی فوجی کم از کم 4 فلسطینیوں کو ہلاک جبکہ 60 کو زخمی کرچکے ہیں۔ اسرائیکلی حملوں کا شکار ہونے والوں میں ایک معذور خاتون اور ایک 16 سالہ طالبعلم بھی شامل ہے جو کہ اپنے دوستوں کے ساتھ پکنک منانے نکلا تھا۔ ہیومن رائٹس واچ کی مشرقِ وسطیٰ کی ڈائریکٹر سارہ وٹسن کا کہنا ہے کہ کئی مہینوں سے اسرائیلی فوجی ان نہتے اور معصوم فلسطینیوں پر گولیاں برسادیتے ہیں کہ جن کا جرم صرف اتنا ہے کہ وہ غزہ کی سرحد پر ایک نظر نہ آنے والی لکیر کو عبور کرنے کے جرم کے مرتکب ہوتے ہیں۔

مزید : انسانی حقوق


loading...