موہن نے صرف ایک بوتل کیلئے اپنی 4سالہ بیٹی بیچ ڈالی

موہن نے صرف ایک بوتل کیلئے اپنی 4سالہ بیٹی بیچ ڈالی
موہن نے صرف ایک بوتل کیلئے اپنی 4سالہ بیٹی بیچ ڈالی

  


بنارس(بیورو رپورٹ)خواتین کے حقوق کو پامال کرنے میں بھارت ہمیشہ سب سے آگے رہا ہے، کبھی چلتی بس میں اجتماعی زیادتی کبھی کھلے میدان میں عزتیں لوٹ لی گئی تو کبھی نشہ پورا کرنے کیلئے حوا کی بیٹیوں کو بھینٹ چڑھا دیا گیا۔ ایسا ہی ایک واقعہ بھارتی ریاست مدھیہ پردیش میں پیش آیا جہاں صرف ایک بوتل شراب کے لئے باپ نے اپنی ہی 4سالہ بیٹی کو 150روپے میں بیچ ڈالا۔ مدھیہ پردیش کے قصبے داتیاکا رہائشی موہن کیوت بے روز ہے جبکہ اس کی بیوی پشپا کام کاج کرکے ا پنا گھر چلاتی ہے۔ایک دن جب وہ کام سے واپس آئی تو بیٹی رادھیکاکو گھر میں نہ پاکر اپنے خاوند سے پوچھا، پہلے تو  موہن نے لاعلمی کا اظہار کیا۔ جس پر پشپا نے اپنی بیٹی کی تلاش شروع کردی پھر اس کو رشتہ داروں نے بتایا کہ آخری بار رادھیکا کو اس کے باپ کے ساتھ ہی دیکھا تھا۔جس پر پشپا نے موہن سے ایک مرتبہ پھر پوچھا تو اس نے اقرار کر لیا کہ شرب پینے کے لئے اس کے پاس پیسے نہیں تھے اس لئے اس نے رادھیکا کو 2نامعلوم افراد کے ہاتھوں 150روپے میں بیچ ڈالا۔ موہن کے اعتراف کے بعد اسے پولیس کے حوالے کیاگیا جہاں وہ ایک بار پھر اپنی بات سے مکر گیا اور پولیس کو بیان دیا کہ دو نامعلوم افراد رادھیکا کو اغوا کرکے لے گئے۔جبکہ اس کی بیوی نے پولیس کو بتایا کہ یہ بے روز گار اور شرابی ہے، رادھیکا سے پہلے بھی وہ اپنی ایک بیٹی بیچ چکا ہے۔ پولیس نے ملزمان کی تلاش شروع کردی تاہم ابھی تک کوئی پیشرفت نہیں ہوئی۔

مزید : جرم و انصاف


loading...