پی ایچ اے میں من پسند کمپنیوں کو ٹھیکے دینے کا انکشاف ‘ رجسٹرڈ فر میں سراپاء احتجاج

پی ایچ اے میں من پسند کمپنیوں کو ٹھیکے دینے کا انکشاف ‘ رجسٹرڈ فر میں سراپاء ...

  



 لاہور(اقبال بھٹی)پی ایچ اے کے ڈویلپمنٹ سیل کے ڈائریکٹر انجینئرنگ کی طرف سے من پسند ٹھیکیداروں کو ٹھیکے دینے کا انکشاف۔گزشتہ دو برسوں میں 19 منصوبوں کے ٹھیکے اپنوں کودے دیئے گئے تفصیلات کے مطابق روز نامہ پاکستان کے دفتر میں آ کر میسرز منیب شفیع نے الزام لگا یا ہے کہ میں پی ایچ اے میں رجسٹرڈ فرم کا مالک ہوں اور گزشتہ دو برسوں میں میرے سمیت کئی رجسٹرڈ ٹھیکے داروں کو کوئی ٹینڈر نہیں دیا گیا ۔ ڈائریکٹرانجینئرنگ من پسند چار فرموں کو ٹھیکے دے رہے ہیںیہاں تک کہ انہوں نے ڈیوٹی پر موجود پی ایچ اے کلر ک کو بھی منع کر رکھا ہے کہ میسرز منیب شفیع کی کسی بھی ٹینڈر کیلئے درخواست وصول نہیں کرنی۔ڈائریکٹر انجینئرنگ کے من پسند ٹھیکیداروں میں میاں داؤد،میاں جاوید،میاں سلامت او ررانا شفیق سلہری شامل ہیں ان چاروں کے علاوہ کسی بھی رجسٹرڈ ٹھیکے دار کو ٹینڈر جار ی نہیں کیے جارے ہیں ۔انہوں نے مزید بتایا کہ ڈائریکٹر انجینئرنگ دوسری بار لوکل گورنمنٹ سے ڈیپوٹیشن پر پی ایچ اے میں آئے ہیں ۔اس سے پہلے 2011میں بھی پی ایچ اے میں ڈیپوٹیشن پر کام کر چکے ہیں ۔میسرز منیب شفیع نے بتا یا کہ مذکورہ 4ٹھیکیداروں کے ساتھ ڈائریکٹر انجینئرنگ کی پارٹنر شپ ہے اور ان کے ساتھ مل کر کرپشن کرتے ہیں جس وجہ سے دوسری بار بھی سفارشیں کروا کر پی ایچ اے میں ڈیپوٹیشن لینے میں کامیاب ہوئے ہیں ۔ اس حوالے سے ڈ ا ئر یکٹر ا نجینئر نگ سے فون پر رابطہ کیا گیا تو بتایا گیا کہ تمام الزامات بے بنیاد ہیں اس حوالے سے ڈپٹی ڈائریکٹرانجینئرنگ نے بتایا کہ پی ایچ اے میں ایسی کوئی پالیسی نہیں کہ کسی ٹھیکدار کو ٹینڈر نہ جار ی کیا جائے۔معیار پر پورا اترنے والے ہر رجسٹرڈ ٹھیکے دار کو ٹینڈر جاری کیا جاتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1