ایف پی سی سی آئی کا حکومت سے زراعت سمیت تمام آمدنیوں پر ٹیکس لگانے کا مطا لبہ

ایف پی سی سی آئی کا حکومت سے زراعت سمیت تمام آمدنیوں پر ٹیکس لگانے کا مطا لبہ

  



 کراچی(آن لائن )فیڈریشن آف پاکستا ن چیمبرز آف کامرس اینڈانڈسٹر ی(ایف پی سی سی آئی)اور انسٹی ٹیوٹ آف کاسٹ اینڈ مینجمنٹ اکاؤنٹنسٹس پاکستان(ICMAP )نے گزشتہ روز مشتر کہ پر ی بجٹ سیمینا ر کا انعقاد فیڈریشن ہا ؤس میں کیا جس میں ایف پی سی سی آئی کے سنیئر نا ئب صدر عبدالر حیم جا نو ، ٹڈاپ کے چیف ایگز یکٹو اور ایف پی سی سی آئی کے سابق صدر ایس ایم منیر ، ایف پی سی سی آئی کے نا ئب صدور اکرا م راجپوت کے علاوہ بز نس کمیو نٹی سے متعلق بڑی تعداد نے شر کت کی۔ عبدالر حیم جا نو نے سیمینار سے خطا ب کر تے ہو ئے کہا کہ ایف پی سی سی آئی اور ICMAP مشتر کہ طو ر پر ہر سا ل بجٹ سے پہلے ایک سیمینا ر فیڈریشن ہا ؤ س میں منعقد کرتے ہیں جس میں معیشت کے کمزور حصوں کو سامنے لا یا جا تا ہے اور حکومت کو آمدنی بڑ ھا نے اور شر ح نمو میں اضا فہ اور منا سب محصو لاتی نظام کے بارے میں تجاویز دی جا تی ہیں۔ سیمینا رکے دوران ملک کے معر وف بز نس لیڈ ر اور ایف پی سی سی آئی کے سا بق صدر ایس ایم منیر نے کہا کہ بز نس کمیونٹی کے 110ارب روپے حکو مت کے پا س ریفنڈکی مد میں پھنسا ہو ا ہے۔ انہو ں نے تجو یز دی کہ حکو مت بز نس کمیونٹی کا یہ پیسہ فوری ادا کرے تا کہ وہ اپنی ایکسپورٹ کو بڑ ھا سکیں۔ زبیر طفیل نے آئند ہ بجٹ کے لیے ایف پی سی سی آئی کی تجا ویز پر روشنی ڈالی اور کہا کہ حکو مت زراعت سمیت تمام آمد نیوں پر ٹیکس لا گو کر ے لیکن FBR بحیثیت ٹیکس کلیکشن ایجنسی دوستا نہ ٹیکس دہندہ ہ پالیسی اپنا ئے نہ کہ بز نس کمیونٹی کو ہرا ساں کر ے۔ تنخواہ دار طبقہ کو سالا نہ 6لا کھ روپے تک انکم ٹیکس میں چھو ٹ دینی چاہیے۔ زبیر طفیل نے مزید کہا کہ پلا نٹ اور مشینر ی کی امپورٹ پر کسٹم ڈیوٹی کو ختم کیا جا ئے تا کہ ملک میں نئی ٹیکنا لو جی آئے اور پیداوار میں اضا فہ ہو اور بیروز گا ری میں کمی آئے ، جب اس مشینری سے آمدنی ملنا شروع ہو تو اس آمدنی پر ٹیکس لگا یا جا ئے۔

مزید : کامرس


loading...