ایف بی اآربرآمد کئے جانیوالے سٹیل پائپ لائن کو سیلز ٹیکس کی چھوٹ نہیں د ے رہا ‘محمد ہاشم

ایف بی اآربرآمد کئے جانیوالے سٹیل پائپ لائن کو سیلز ٹیکس کی چھوٹ نہیں د ے رہا ...

  



 لاہور(پ ر)پاکستان سٹیل لائن پائپ مینوفیکچرنگ ایسوسی ایشن( پسپا) نے اس امر پر تشویش کا اظہار کیا ہے کہ وزارت تجارت کی طرف سے جاری کردہ وضاحتی ہدایت نامہ کے باوجود(ایف بی آر افعانستان اور ساوتھ ایشین ریجن (سار) کو برآمد کئے جانے والے سٹیل پائپ لائن کو سیلز ٹیکس کی چھوٹ نہیں د ے رہا ۔ جس کی وجہ سے سٹیل پائپ کی برآمدات میں مسلسل کمی واقع ہو رہی ہے۔ لہٰذاہ پاکستان سٹیل لائن پائپ مینوفیکچرنگ ایسوسی ایشن (پسپا) کے چےئرمین نے وفاقی وزیر برائے تجارت انجینئرخرم دستگیر سے دوبارہ مددمانگ لی ہے ۔محمد ہاشم نے بتا یا کہ وفاقی وزیر تجارت نے انکی ایسوسی ایشن کے ساتھ اسلام آباد میں ہونے والے ایک حالیہ اجلاس میں اس مسئلے کی نہ صرف یقین دہانی کرائی تھی۔ بلکہ ایف بی آر کو ایک چھٹی بھی ارسال کی تھی جس میں واضح ہدائت کی گئی تھی کہ ایکسپورٹ پراسیسنگ زون سے اور مینوفیچرنگ بانڈ کے ذریعے سے افغانستان اور جنوبی ایشیائی ممالک کو کی جانے والی پائپ کی برآمدات سیلز ٹیکس سے مستثنےٰ ہیں اور ان پر یہ ٹیکس عائد نہیں کیا جانا چاہیئے۔ لیکن محمد ہاشم نے اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا کہ ایف بی آر ایم او سی کی واضح ہدایت کے باوجود مینوفیکچرنگ بانڈز پر سیلز ٹیکس لگانے پر مصر ہے۔اس لیے محمد ہاشم نے کہا کہ ہمارے پاس اس مسئلے کے حل کیلئے وفاقی وزیر تجارت کو دوبارہ مداخلت کی اپیل کے سوا کوئی چارہ کار نہیں۔چیرمین پسپا نے کہا کہ افغانستان اور جنوبی ایشیائی ممالک میں سٹیل لائن پائپ کی کافی ڈیمانڈ ہے لیکن برآمدی مال پر سیلز ٹیکس کی وجہ سے ہم اپنے عالمی تجارتی حریفوں کے مقابلے کی سکت کھو بیٹھے ہیں۔تاہم انہوں نے اس امر پر اطمینان کا اظہار کیا کہ وفاقی وزارت تجارت اس مسئلے کی اہمیت کو سمجھتی ہے ۔ مگر افسوس کہ بدقسمتی سے ایف بی آر اس دیرینہ مسلئے کو سمجھنے سے قاصر ہے۔انہوں نے کہا کہ ایف بی آر جیسے سرکاری اداروں کو حکومت کے برآمدی اہداف کی تکمیل کیلئے برآمدی تاجروں کے ساتھ موافقانہ رویہ اختیار کرنا چاہیے۔اور جو رعائت حکومت کی طرف سے انہیں دی جاتی ہے اس کا اطلاق کرنے میں بخل سے کام نہیں لینا چاہیے۔محمد ہاشم نے وزیر خزانہ محمد اسحاق ڈار اور وزیر تجارت انجینئر خرم دستگیر سے اپیل کی ہے کہ وہ ایف بی آر حکام کو ایکسپورٹ پراسیسنگ زون اور مینوفیچکرنگ بانڈ کے توسط سے برآمد کئے جانے والے سٹیل لائن پائپ کو سیلز ٹیکس کی چھوٹ دینے کا پابند بنائیں۔بصورت دیگر افغانستان اور جنوبی ایشیائی ممالک کو پاکستانی پائپ کی برآمد مکمل طور پر بند ہوجائے گی۔ جس سے گرتی ہوئی برآمدات میں مزید کمی ہوجائے گی۔

مزید : کامرس


loading...