پنجاب فوڈ اتھارٹی نے ایک اور بناسپتی برانڈ کو مضر صحت قرار دیدیا

پنجاب فوڈ اتھارٹی نے ایک اور بناسپتی برانڈ کو مضر صحت قرار دیدیا

  



لاہور(نامہ نگار خصوصی )پنجاب فوڈ اتھارٹی نے بناسپتی کے ایک اور برانڈ کو مضر صحت قرار دے دیاہے ،دوسری طرف پہلے سے مضر صحت قرار دیئے گئے بناسپتی کے 5برانڈز کے خلاف کارروائی کے لئے لاہور ہائی کورٹ میں رٹ درخواست دائر کردی گئی ہے ۔پنجاب فوڈ اتھارٹی کی گورنمنٹ پبلک اینا لسٹ لیبارٹری نے گائے بناسپتی کو بھی مضر صحت قرار دے دیا ہے ۔رپورٹ کے مطابق گائے بناسپتی میں وٹامن اے شامل نہیں ہے جبکہ بین الاقوامی معیار کے تحت ایک پونڈ بناسپتی میں وٹامن اے کے 15ہزار یونٹ شامل ہونا ضروری ہیں۔رپورٹ کے مطابق گائے بناسپتی کا نمونہ لیبارٹری ٹیسٹ میں انسانی صحت کے لئے نقصان دہ پایا گیا ہے ۔گورنمنٹ پبلک اینا لسٹ لیبارٹری نے اسے انسانی استعمال کے لئے "ان فٹ "قرار دے دیا ہے۔قانونی اور مقررہ معیار کے مطابق بناسپتی میں موجود چکنائی کوزیادہ سے زیادہ 40درجہ سینٹی گریڈ پر پگھل جانا چاہئیے اور چکنائی کی مقدار 43ہونی چاہیے جبکہ لیبارٹری ٹیسٹ رپورٹ کے مطابق گائے بناسپتی میں چکنائی کی یہ مقدار48پائی گئی ہے۔بناسپتی تیار کرنے والی 5کمپنیوں کے خلاف چودھری شعیب سلیم ایڈووکیٹ نے درخواست دائر کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ان کمپنیوں کے بناسپتی برانڈز کو پنجاب فوڈ اتھارٹی کی گورنمنٹ پبلک اینالسٹ لیبارٹری نے مضر صحت قرار دیا ہے ، مدعا علیہ کمپنیوں کے لائسنس معطل کرکے ان کی مصنوعات کی فروخت پر پابندی عائد کی جائے ۔درخواست میں جن کمپنیوں کو فریق بنایا گیا ہے ان میں خالص بناسپتی ، شاہ تاج بناسپتی ، سوہنا بناسپتی ، میزان بناسپتی اورکسان خالص گھی شامل ہیں۔ بناسپتی

مزید : صفحہ آخر


loading...