نیپالاور بھارت میں زلزلے نے تباہی مچادی ‘ 1500سے زائد ہلاک ‘ ہزاروں لاپتہ

نیپالاور بھارت میں زلزلے نے تباہی مچادی ‘ 1500سے زائد ہلاک ‘ ہزاروں لاپتہ

  



 کھٹمنڈو/نئی دہلی/اسلام آباد/ڈھاکہ(مانیٹرنگ ڈیسک ،اے این این،آن لائن ،آئی این پی) نیپال میں سات اعشاریہ نو شدت کے قیامت خیز زلزلے میں 19ویں صدی کے تاریخی دھرہارا ٹاور سمیت سینکڑوں عمارتیں ملبے کے ڈھیرمیں تبدیل ہوگئیں،تقریباًپندرہ سو سے زائدافراد ہلاک ،ہزاروں لاپتہ ہوگئے ، مواصلاتی نظام درہم برہم ،امدادی کارروائیوں کیلئے فوج طلب،ماؤنٹ ایورسٹ پر برفانی طوفان ،کوہ پیماہ پھنس گئے،ادھر بھارت کی مختلف ریاستوں میں بھی سات اعشاریہ سات شدت کے زلزلے میں متعد عمارتیں گرگئیں ،20سے زائدافراد ہلاک،50سے زائدزخمی ہوگئے،لاہور،پشاور اور گلگت بلتستان سمیت پاکستان کے مختلف حصوں اوربنگلہ دیش میں بھی زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے تاہم کوئی نقصان نہیں ہوا، وزیر اعظم نواز شریف کا نیپال اوربھارت میں زلزلے سے بڑے پیمانے پرجانی نقصان پر افسوس کا اظہار،امدادکی پیشکش کردی ۔تفصیلات کے مطابق ہفتہ کے روزنیپال،بھارت،پاکستان اوربنگلہ دیش میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے ۔ امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق زلزلے کی سب سے زیادہ شدت سات اعشاریہ نو نیپالی درالحکومت کھٹمنڈواوراس کے گردونواح میں ریکارڈ کی گئی اور اس کا مرکز نیپال کے ضلع کاسکی کے ہیڈکواٹر پوکھرا کے مشرق میں 80 کلومیٹر دور کا علاقہ تھا۔ز لزلے کے نتیجے میں کھٹمنڈو شہر میں واقع 19ویں صدی کے تاریخی دھرہار ٹاور سمیت سینکڑوں عمارتیں منہد م اورہزاروں افراد لاپتہ ہوگئے ۔ زلزلے کے باعث مواصلاتی نظام تباہ ہوگیا۔امدادی کارروائیوں کیلئے فوج کوطلب کرلیاگیاہے آخری اطلاعات ملنے تک ملبے سے سات سوکے قریب لاشیں نکالی جاچکی تھیں جبکہ مزیدہلاکتوں کاخدشہ ظاہرکیاجارہاہے جبکہ زخمیوں کو مختلف ہسپتالوں میں منتقل کیاجارہاہے۔زلزلے کے بعد نیپال میں ائیر پورٹس بند کر کے پروازوں کارخ بھارت کی جانب موڑ دیا گیا ۔شدیدزلزلے کے بعد آفٹر شاکس کاسلسلہ جاری رہا اورخوف کے ما رے لوگ کھلے آسمان تلے آ گئے ۔ زلزلے کے بعد مانٹ ایورسٹ میں برفانی طوفان کے باعث متعدد کوہ پیماء پھنس گئے۔واضح رہے کہ نیپال میں 1934کے بعد آنے والا یہ سب سے شدید ترین زلزلہ ہے۔ نیپال کے بعدسب سے زیادہ شدت کازلزلہ بھارتی ریاستوں بہار، جے پور ،پٹنہ ، اترپردیش،مدھیہ پردیش ، آسام ، اڑیسہ ،نئی دہلی ،مغربی بنگال اور کولکتہ میں آیاجس کی شدت سات اعشاریہ سات ریکارڈ کی گئی زلزلے کے باعت متعد عمارتیں گرگئیں ،آخری اطلاعات ملنے تک 20سے زائدلاشیں نکالی جاچکی تھیں جبکہ50سے زائدزخمی ہوئے ۔بھارتی میڈیاکے مطابق نیپال سے ملحقہ ریاستوں میں دو بار زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے۔زلزلے کے باعث دہلی کے کناٹ پلیس میں لوگ اونچی عمارتوں کو چھوڑ کر سڑکوں پر نکل آئے اسی طرح لوگ کارباری مراکز ، دفتروں او ر گھروں سے باہر نکل آئے اور ایکدوسرے کی خیریت دریافت کرتے رہے۔پاکستان کے میٹرولوجیکل آفس کے مطابق زلزلے کے جھٹکے آزاد کشمیر، گلگت بالتستان، پیشاور اور لاہور میں محسوس کیے گئے تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوااسی طرح بنگلہ دیش میں بھی زلزلے سے کوئی نقصان نہیں ہوا۔ محکمہ موسمیات کے مطابق پورے ہمالیہ ریجن میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے ۔ وزیر اعظم نواز شریف نے نیپال اور بھارت میں زلزلے سے بھاری نقصان پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے دفتر خارجہ کو صورتحال سے باخبر رکھنے اور متعلقہ حکام کو دونوں ممالک میں فوری امداد پہنچانے کی ہدایت کی ۔

مزید : صفحہ اول


loading...