گزشتہ 15 برسوں میں لاکھوں قیمتی جانیں زلزلوں کی نذرہو گئیں

گزشتہ 15 برسوں میں لاکھوں قیمتی جانیں زلزلوں کی نذرہو گئیں

  



لاہور (خصوصی رپورٹ) گزشتہ 15 برسوں میں لاکھوں قیمتی جانیں زلزلوں کی نذرہو گئیں،چھبیس دسمبر 2004 کو 9.3 شدت کے شدید زلزلے کے بعد آنے والے سونامی نے تباہی مچا دی۔ ملائشیا، انڈونیشیا، تھائی لینڈ، میانمار میں دو لاکھ سے زائد افراد مارے گئے۔ سونامی کے اثرات بنگلہ دیش، بھارت ، جاپان تک محسوس کئے گئے۔ آٹھ اکتوبر 2005 کو پاکستان میں آنے والے 7.6 شدت کے زلزلے نے اسلام آباد، آزاد کشمیر، خیبرپختونخوا سمیت شمالی علاقوں میں تباہی مچا دی۔ آزاد کشمیر میں چھیاسی ہزار کے قریب افراد جاں بحق اور انہتر ہزار سے زائد زخمی ہو گئے جبکہ کئی شہر مکمل تباہ ہو گئے۔ خیبر پختون خوا میں بھی سینکڑوں افراد جاں بحق ہوئے۔ پچیس ستمبر 2013 کو بلوچستان کے مختلف علاقوں میں 7.7 شدت کا زلزلہ آیا جس میں تین سو سے زائد افراد جاں بحق ہو گئے۔ بیس اپریل 2013 کو چین کے سیچوآن صوبہ میں 6.6 شدت کے زلزلے میں ڈیڑھ سو کے قریب افراد مارے گئے۔ بیس ستمبر 2011 کو بھارت کے علاقے سکم میں 6.8 شدت کے زلزلے نے 68 جانیں نگل لیں جبکہ تین سو سے زائد زخمی ہوئے۔ چھبیس جنوری 2001 کو بھارتی ریاست گجرات کے شہر بھوج میں 7.7 شدت کے زلزلے نے زبردست تباہی مچائی جس میں دس ہزار سے زائد افراد جانوں سے گئے۔

مزید : صفحہ اول