چوری کے مقدمے میں بے گناہ دئیے جانے کے باوجود سی آئی اے نے خاتون کے شوہر کو اٹھالیا

چوری کے مقدمے میں بے گناہ دئیے جانے کے باوجود سی آئی اے نے خاتون کے شوہر کو ...

  



لاہور(کرائم سیل) باغبانپورہ کے علاقہ میں نامناسب تعلقات قائم نہ کر نے پر مالک نے ملازمہ پر چوری کا مقدمہ درج کر وادیا ،ایس پی انویسٹی گیشن کینٹ نے تفتیش کے بعدملازمہ کو بے گناہ قرار دے دیا۔2ماہ گزرنے کے بعد سی آئی اے کینٹ نے ملازمہ کے خاوند کو اٹھا لیا ساری رات تشدد کر کے اعتراف جرم کر والیا۔اگر تشدد کر تے تو پاؤں پر چل کر آپ کے پاس نہ پہنچتا ،سی آئی اے ڈی ایس پی کینٹ کا موقف۔ تفصیلات کے مطابق باغبانپورہ کے رہائشی حمیدنے ’’پاکستان‘‘سے گفتگو کر تے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ اس کی بیو ی شمائلہ محلہ دارسہیل کے گھر میں بطور ملازمہ کام کرتی تھی، اس دوران سہیل نے اس سے تعلقات قائم کر نے کی کوشش کی جس سے انکار پر اس نے ملازمہ کو بلیک میل کر نے کے لیے اس کے خلاف 6لاکھ روپے چوری کا مقدمہ درج کر وادیاجس کی تفتیش کر تے ہو ئے ایس پی انویسٹی گیشن کینٹ نے میری بیوی کو بے گناہ قرار دیا۔دو ماہ گزرنے کے بعد سی آئی اے کینٹ کے ملازمین نے مجھے گھر سے اٹھا لیا اور لے جا کر رات بھر تشدد کا نشانہ بنا تے رہے اورزبر دستی اقرار جرم کر وانے کے بعد کاغذات پر انگو ٹھے لگوانے کے بعد چھو ڑ دیا ۔متاثرہ شخض اپنے بھائیوں کے ساتھ روزنامہ ’’پاکستان‘‘کے آفس پہنچ گیا۔جب اس بارے میں ڈی ایس پی سی آئی اے عمر فاروق بلوچ سے رابطہ کیا گیا تو اس کا کہنا تھا کہ اگر اس پر تشدد کیا ہو تا تو یہ خود اپنے پیروں پر چل کر آپ کے آفس نہ پہنچتا ۔مدعی نے تفتیش کے لیے ہمیں درخواست دی تھی ،ہم اسے صرف تفتیش کے لیے لا ئے تھے اور بعد ازاں اسے معززین علاقہ کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی۔

مزید : علاقائی


loading...