پاکستان اور ترکی یمن تنازعہ کے پر امن حل کیلئے کوششیں جاری رکھیں گے ،ممنون حسین

پاکستان اور ترکی یمن تنازعہ کے پر امن حل کیلئے کوششیں جاری رکھیں گے ،ممنون ...

  



انقرہ (آن لائن )صدرممنون حسین نے کہا ہے کہ پاکستان اور ترکی اپنے قریبی تعلقات کو تمام شعبوں پرمشتمل جامع اشتراک عمل میں تبدیل کرنے کیلئے کوششیں کررہے ہیں۔ترکی کے دورے کے دوران ایک ترک روزنامہ صباح کو ایک انٹرویو میں انہوں نے کہاکہ دونوں ملکوں نے آزاد تجارت کے معاہدے پر مذاکرات شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔انہوں نے کہاکہ دونوں ممالک اقتصادی رابطے بڑھانے ، دوطرفہ تجارت کے فروغ اور توانائی ، بنیادی ڈھانچے کی ترقی ، ٹرانسپورٹ ،ہاوسنگ اور زراعت کے شعبوں میں سرمایہ کاری میں اضافے پرتوجہ مرکوز کررہے ہیں۔صدر نے کہاکہ پاکستان اورترکی عالم اسلام کے صف اول کے جمہوری ممالک ہونے کی حیثیت سے خطے میں استحکام کا باعث ہیں۔انہوں نے کہاکہ دونوں ممالک کے قریبی رابطے اور مشترکہ کوششیں علاقائی امن واستحکام میں مدد گار ثابت ہوسکتے ہیں، صدرنے کہاکہ پیچیدہ اور مشکل علاقائی ماحول میں پاکستان اورترکی بین الاقوامی ایشوز پریکساں نکتہ نظر رکھتے ہیں۔ دونوں ممالک اپنے خوشگوار تعلقات تمام شعبوں میں جامع شراکت داری میں تبدیل کرنے کی کوششیں کررہے ہیں۔ بڑے شعبوں میں توانائی، انفرااسٹرکچر، ٹرانسپورٹیشن، مکانات، میونسپل سروسز اور زراعت شامل ہیں۔ آزادانہ تجارتی معاہدے کیلیے بات چیت شروع کرنے کافیصلہ کیاگیا ہے۔ ان کوششوں کے نتائج دونوں ممالک کی قیادت کے وڑن اورعوام کی امنگوں کے مطابق ہوں گے۔صدرنے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان مذہبی، ثقافتی اور مشترکہ تاریخ پر مبنی گہرے تعلقات، محبت اورلگاؤ بے مثال ہے۔ صدرنے پاکستان اورترکی میں روحانی تعلقات کا بھی ذکرکیا جس کی مثال علامہ اقبال اور مولانارومی کی شاعری سے ملتی ہے۔ انھوں نے ان منفردتعلقات کی قوت کواجاگر کرنے کیلیے مزیدریسرچ، اکیڈمک اسٹڈیز اورباہمی تعاون کے مزیدشعبوں کی نشاندہی پر زور دیا۔ صدرنے کہاکہ وہ اناکیلی اورسی بیٹلزکی100ویں سالگرہ میں شرکت کیلیے یہاں آئے ہیں۔ یمن بحران کے متعلق صدرنے کہاکہ دونوں ممالک تنازع کو جلداور پرامن حل کرنے میں مدد کیلیے کوششیں جاری رکھیں گے۔ ممنون حسین

مزید : علاقائی