بھارت کشمیریوں پر مظالم بند کرے ،میرا وہاں کوئی کاروبار نہیں : آصف زرداری

بھارت کشمیریوں پر مظالم بند کرے ،میرا وہاں کوئی کاروبار نہیں : آصف زرداری
بھارت کشمیریوں پر مظالم بند کرے ،میرا وہاں کوئی کاروبار نہیں : آصف زرداری

  



کراچی ( مانیٹرنگ ڈیسک ) پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری نے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت کشمیریوں کو تنگ نہ کرے ۔ کراچی کے علاقے لیاری میں خطاب کرتے ہوئے سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ ان کا بھارت میں کوئی کاروبار نہیں ہے،وہ بھارت کو خبردار کرتے ہیں کہ کشمیریوں پر جاری مظالم کو بند کرے اور انہیں بھی آزادی کے ساتھ زندگی گزارنے کا موقع دے ۔’چند کاروباری‘افراد پر طنز کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان کے کچھ سیاست دانوں کے کاروبار بھارت سے وابستہ ہیں اس لیے وہ بھارت کے خلاف کھل کر بات نہیں کرتے لیکن وہ بھارت سے کشمیریوں پر کیے جانے والے مظالم کو بند کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں ۔

آئندہ انتخابات کب ہوں گے ، مسلم لیگ ن کے رہنما نے بتا دیا

سابق صدر نے لیاری کی عوام کے خصوصی طور پر ایک ارب روپے کے ترقیاتی پیکج کا اعلان بھی کیا ۔انہوں نے کہا کہ لیاری میں بلاول انجینئرنگ کالج بنایا جائے گا اور پیپلز پارٹی نوجوانوں کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کر کے علاقے کو امن کا گہوارا بنائے گی۔ انہوں نے مزید اعلان کیا کہ اب وہ وقت نہیں ہے کہ لوگوں میں زمینیں تقسیم کی جائیں لیکن ان کی حکومت لیاری کی عوام کے لیے فلیٹ بنائے گی جہاں ان کی رہائش کے مسئلے کو ختم کیا جائے گا ۔ آصف زرداری نے مزید کہا کہ وہ جانتے ہیں کہ لیاری میں پانی کی قلت کا مسئلہ ہے اور اسی کے پیش نظر انہوں نے وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کو تین ماہ میں پانی کا مسئلہ ختم کرنے کی ہدایات بھی کی ہیں ۔ سابق صدر نے لیاری کے کنٹریکٹ ملازمین کو مستقل کرنے کا اعلان بھی کیا اور انہوں نے کہا کہ سابق آمر پرویز مشرف کی باقیات نے اس علاقے میں خون کی ہولی کھیلی تھی لیکن پیپلز پارٹی اس علاقے کا امن واپس کر ے گی ۔

لیاری اور پیپلز پارٹی کا کیا رشتہ ہے ، جاننے کے لیے کلک کریں

چینی صدر کے دورہ پاکستان کے بعد ملک میں آنے والی سرمایہ کاری کے حوالے سے پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین کا کہنا تھا کہ چین کے ساتھ تعلقات کا آغاز پیپلز پارٹی نے کیاتھا اور انہوں نے اسلام آباد میں تمام سیاسی جماعتوں کو اکٹھا کر کے فیصلہ کیا ہے تاکہ پاکستان آنے والی تمام سرمایہ کاری کو ضائع نہ کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کی پالیسیوں پر کڑی نظر رکھی جائے گی اور چین سے آنے والی تمام سرمایہ کاری کو عوام کی فلاح کے لیے استعمال کیا جائے گا ۔ آصف زرادری کا کہنا تھا کہ اس سرمایہ کاری سے بلوچوں اور پشتونوں کے حقوق کا بھی تحفظ کیا جائے گا اور انہیں کسی صورت بھی پیچھے نہیں چھوڑا جائے گا ۔

اپنی تقریر کے دوران آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ وہ ذوالفقار علی بھٹو کے پیروکار ہیں اور انہی کے مطابق سیاست کرنے کی کوشش کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ذوالفقار علی بھٹو کہتے تھے کہ وہ سیاست نہیں عبادت کرتے ہیں اسی لیے وہ بھی نسل در نسل عوام کی خدمت کرنا چاہتے ہیں ۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے سابق صدر کا کہنا تھا کہ کپتان کو الیکشن ہارنے کا دکھ ہے لیکن ہر الیکشن میں پیپلز پارٹی کا مینڈیٹ چوری کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی ہار یا جیت کی بات نہیں کرتی لیکن اب ہم اپنے مخالفین کو بتانا چاہتے ہیں کہ پیپلز پارٹی ہر موقع پر ان سے لڑے گی اور ہر طبقے کے محنت کشوں کو مضبوط کرے گی ۔ پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین کا کہنا تھا کہ وہ اندرون سندھ اور پنجاب کے تمام مسائل سے آگاہ ہیں اور اب وہ ملک گیر جلسوں کا آغاز کر رہے ہیں ۔ انہوں نے پارٹی کارکنان سے کہا کہ جہاں بھی دیکھو بھٹو ازم نظر آتا ہے اس لیے کارکنان کو چاہیئے کہ پارٹی کو مضبوط کریں اور نوجوانوں کو موقع دیں ۔

یمن جنگ میں ملی سعودی فورسز کو اہم کامیابی ، تفصیلات جاننے کے لیے کلک کریں

لیاری کی عوام سے محبت کا اظہار کرتے ہوئے سابق صدر کا کہنا تھا کہ ایک وقت تھا جب یہاں کی عوام نے انہیں قومی اسمبلی کا ممبر بنایا تھا ۔ انہوں نے بتایا کہ لیاری کل بھی پیپلز پارٹی کا قلعہ تھا اور آئندہ بھی رہے گا ۔جلسہ کے موقع پر انہوں نے کہا کہ آج وہ لیاری کا سماں دیکھ کر جذباتی ہو گئے ہیں اور وہ اپنی آنکھوں سے عوام کا پیار دیکھ رہے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ ان کے دو بچوں بختاور بھٹو زرداری اور بلاول بھٹو زرداری کی پیدائش لیاری کی ہے اور اب بھی اکثر بلاول بھٹو زرداری انہیں بتائے بغیر چھپ کر لیاری آ جاتا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ جب تک بلاول بھٹو اور آصفہ بھٹو وطن واپس نہیں آ جاتے وہ پارٹی کی قیادت کریں گے اور پارٹی کا جھنڈا سنبھالے رکھیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ لیاری میں پیپلز پارٹی کے شہیدوں کی فہرست بہت لمبی ہے اور اگر وہ سب کے نام لینے لگے تو رات گزر جائے گی ۔ انہوں نے کارکنان کو امید دلائی کہ پیپلز پارٹی کے مینڈیٹ چوری ہونے سے پریشان نہیں ہونا چاہیئے کیونکہ پیپلز پارٹی ہر الیکشن میں دوبارہ زندہ ہوتی ہے اور آئندہ الیکشن میں بھی پیپلز پارٹی بھاری اکثریت سے کامیاب ہو گی ۔

تقریر کے آخر میں پاکستانی میڈیا پر تنقید کرتے ہوئے آصف زرداری کا کہنا تھا کہ میڈیا کے کچھ افراد آزادی اظہار رائے کا غلط اور منفی استعمال کر رہے ہیں انہیں ایسا نہیں کرنا چاہیئے ۔ انہوں نے کہا کہ ایسا کرنے والوں کو سوچنا چاہیئے کہ انہوں نے اللہ کی عدالت میں بھی پیش ہونا ہے اور اس بات کا خوف بھی دل میں رکھنا چاہیئے ۔

مزید : کراچی /اہم خبریں