4ماہ کے دوران مختلف واقعات میں 117افراد کو قتل کیا گیا

    4ماہ کے دوران مختلف واقعات میں 117افراد کو قتل کیا گیا

  

لاہور(کر ائم رپو رٹ) رواں سال مختلف واقعات میں 117 افراد کو قتل کیا گیا،ڈاکوؤں نے مزاحمت پر 9 افراد کو موت کے گھاٹ اتارا۔تفصیلات کے مطابق شہر میں لاک ڈاون کے باوجود قتل جیسی سنگین جرائم کی وارداتیں کم نہ ہوسکیں، لاک ڈاون سے پہلے جان ومال کا تحفظ نہ ہی لاک ڈاون کے دوران، جرائم پیشہ افراد نے بریک نہ لگائی اور شہری لٹتے رہے، ڈکیتی مزاحمت پر ڈاکوؤں نے 3 افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا،شاد باغ میں تاجر کوقتل کردیا گیا، ڈاکو 10 لاکھ روپے بھی چھین کر لئے گئے، شاہدرہ میں راہگیر قتل ہوگیا اورڈاکو ڈیڑھ لاکھ روپے لوٹ کر لے گئے دوسری جانب لیاقت آباد میں بھی ڈاکوؤں کے ہاتھوں کیشئر قتل ہوا،درجنوں وارداتوں میں مختلف شہری لاکھوں روپے لٹا بیٹھے۔سی سی پی اوذوالفقار حمید کا کہنا ہے کہ رمضان میں جرائم بڑھنے کے امکانات موجود ہوتے ہیں۔واضح رہے کہ لاک ڈاون کے دوران 13 افراد کو مختلف وجوہات پر قتل کیا گیا جبکہ لاک ڈاون سے پہلے15 دنوں میں 18 افراد کو موت کے گھاٹ اتارا گیا، کاروباری بندش کے دنوں میں بھی 124 افراد ڈکیتی اور راہزنی کی وارداتوں میں مال سے محروم ہوئے لاک ڈاون سے قبل 15 دنوں میں 164 وارداتیں، اسی طرح گاڑی و موٹرسائیکل چوری کی 312 وارداتیں لاک ڈاؤن کے دوران ہی رپورٹ ہوئیں۔

مزید :

علاقائی -