سمارٹ لاک ڈاؤن سے انتشار پھیل رہا ہے،لیاقت بلوچ

سمارٹ لاک ڈاؤن سے انتشار پھیل رہا ہے،لیاقت بلوچ

  

لاہور(نمائندہ خصوصی) نائب امیر جماعت اسلامی اور سابق پارلیمانی لیڈر لیاقت بلوچ نے لاہور میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاہے کہ ڈاکٹرز کی وارننگ اہم ہے لیکن اب تو دو تہائی لاک ڈاؤن ختم ہوچکا ہے، سرگرمیاں لوٹ آئی ہیں۔ مکمل لاک ڈاؤن پر وزیراعظم راضی نہیں، سمارٹ لاک ڈاؤن کے تحت احتیاطوں کے ساتھ تمام سرگرمیاں شروع کردی جائیں۔ لاک ڈاؤن ہے بھی نہیں بھی حکمت عملی سے بدنظمی اور انتشار پیدا ہو گا۔شوکت خانم ہسپتال چندے اور مہنگے ترین علاج سے چلایا جارہاہے۔ ملک بھی کشکول، مہنگائی، افراط زر سے چلایا جارہاہے۔

عمران خان کی ملک چلانے کی حکمت عملی اقتصادی نظام کو تباہ کردے گی۔ کورونا وبا سے پاکستان کا بڑا نقصان ہو رہا ہے۔ سماجی، پارلیمانی، سماجی اور اقتصادی بحران کنٹرول سے باہر ہوتا جارہاہے۔ ترقی کا پہیہ جام ہوگیاہے۔ احتساب کا ستیاناس وزیراعظم اور وزراء کی بد زبانی اور بدکلامی نے کردیاہے۔پاکستان کے لیے کشمیر، افغانستان کے محاذ پر سلامتی کے بڑے چیلنج درپیش ہیں۔لیاقت بلوچ نے کہاکہ اب وقت ہے کہ بحرانوں سے نکلنے کے لیے قومی وحدت، قومی متفقہ لائحہ عمل کے لیے حکومت، ریاست اور سیاست قومی ترجیحات پر یک آواز ہوں وگرنہ انارکی پیدا ہوگی اور نئی نسل برباد ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ باجماعت نمازوں، ماہ رمضان کی مساجد میں عبادات کے لیے علماء، امام، خطیب، منتظمین اور نمازی مشترکہ اعلامیہ کے بیس نکات پر مثالی عملدرآمد کیں گے۔ رجوع الی اللہ، عبادات ڈسپلن اور پرہیز گاری کی تربیت دیتی ہے۔ عبادات اورتوبہ و استغفار کی طرف لوٹ آنے والوں کو اللہ محفوظ رکھے گا، شفاء عطا کرے گا۔ دریں اثنالیاقت بلوچ نے کہاکہ گوجرہ میں سابق ایم این اے چوہدری امجد وڑائچ، ایم این اے چوہدری خالد وڑائچ، ایم پی اے چوہدری بلال وڑائچ کی والدہ اور پشاور میں جماعت اسلامی کے رہنما شہید حاجی دوست محمد کے بیٹے کی حادثہ میں شہادت پر تعزیت اور دعائے مغفرت کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -