قرنطینہ مراکز میں زیر علاج مریضوں کوسہولیات دی جائیں،علی شہزاد

قرنطینہ مراکز میں زیر علاج مریضوں کوسہولیات دی جائیں،علی شہزاد

  

رحیم یارخان (بیورورپورٹ)ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے کورونا ٹیسٹ منفی آنے پر گھروں کو جانے والے تبلیغی جماعتوں کے ممبران کو بہترین انتظامات کے ساتھ آبائی علاقوں میں روانگی کرنے پر اسسٹنٹ کمشنرز اور محکمہ ہیلتھ کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہا کہ بہترین ٹیم ورک کی بدولت ضلعی سطح پر اہداف کا حصول آسان ہو رہا ہے ہمیں مزید محنت اور لگن سے اس سپرٹ کو (بقیہ نمبر9صفحہ6پر)

برقرار رکھتے ہوئے ضلع میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے انسدادی و حفاظتی اقدامات جاری رکھنے ہوں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ضلعی رابطہ کمیٹی برائے انسداد کورونا کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ڈپٹی کمشنر نے ہدایت کی کہ جس مساجد سے تبلیغی جماعتوں کے ممبران اپنے گھروں کو روانہ ہوئے ہیں ان مساجد کو عوام کے لئے کھولنے سے قبل محکمہ ہیلتھ، ریونیو اور میونسپل کمیٹیز کی ٹیم مشترکہ وزٹ کرتے ہوئے جراثیم کش پانی سے صفائی یقینی بنائیں اور مکمل تسلی کے بعد مساجد کو عام عوام کے لئے کھولا جائے۔انہوں نے ہدایت کی کہ قرنطینہ مراکز اور ہسپتالوں میں زیر علاج کورونا وائرس کے مشتبہ و کنفرم مریضوں کوسحر و افطار میں روزہ رکھنے اور کھولنے کے لئے کھانے پینے کی اشیاء بروقت فراہم کی جائیں جبکہ اگر کوئی ڈاکٹرز کی تجویز پر روزہ نہیں رکھ سکتا تو ایسے مریضوں کوتین وقت کھانے کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔انہوں نے ہدایت کی کہ کورونا وائرس کے مشتبہ وکنفرم مریضوں کو ادویات کی فراہمی میں کوئی مسئلہ درپیش نہیں ہو نا چاہیے۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ حالیہ دنوں مختلف ممالک سے بذریعہ ہوائی سفر واپس آنے والے شہریوں کی مکمل مانیٹرنگ اور انہیں 14روز تک ہوم آئسولیٹ کیا جائے جبکہ محکمہ صحت کی فیلڈ ٹیمیں بیرون ممالک سے آنے والے افراد کے ساتھ مکمل رابطہ میں رہیں۔اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر (ریونیو)ڈاکٹر جہانزیب حسین لابر،سی ای او ہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا سمیت دیگر متعلقہ اداروں کے افسران موجود تھے۔

علی شہزاد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -