آڑھتی، فوڈاہلکاروں کی ملی بھگت، ناقص گندم سرکارکوبیچنے کاانکشاف

  آڑھتی، فوڈاہلکاروں کی ملی بھگت، ناقص گندم سرکارکوبیچنے کاانکشاف

  

رحیم یارخان(بیورورپورٹ) محکمہ خوراک نے گندم خریداری ٹارگٹ پورا کرنے کی خاطر مڈل مینوں اور غلہ منڈی سے گندم کی خریداری شروع کر دی،محکمہ فوڈ غلہ منڈی کے آڑھتیوں کی ملی بھگت سے ناقص گندم خرید رہے ہیں۔ تفصیل کے مطابق محکمہ خوراک کو رواں سال 2020,2021 میں گندم خریداری ٹارگٹ پورا کرنے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے کیونکہ ضلعی(بقیہ نمبر12صفحہ6پر)

بندی ہونے کے باعث فلور ملزمالکان اور سیڈ کمپنیوں نے مالکان نے بھی گندم خریداری شروع کر رکھی ہے جس پر محکمہ خوراک نے فلورملز اور سیڈ کمپنیوں کو گندم خریداری پر پابندی لگا دی جس کے بعد فلور ملز اور سیڈ کمپنیوں نے چور راستے سے گندم خرید کرنے کی کوشش جاری رکھے ہوئے ہیں جس پر محکمہ خوراک نے گندم کی پکردھکڑشروع کر دی ہے۔ اب محکمہ خوراک کو اپنا ٹارگٹ پورا ہوتا ہوا مشکل نظر آ رہا ہے کیونکہ سیڈ کمپنیاں اور فلور ملز کاشتکاروں سے سرکاری ریٹ سے زائد نرخوں پر خرید کر رہے ہیں جس کی وجہ سے کاشکاروں نے سرکاری گوداموں کو گندم فروخت انکارکردیا ہے۔با وثوق ذرائع کے مطابق محکمہ خوراک نے اپنا ٹارگٹ پورا کرنے کی خاظر مڈل مینوں اور غلہ منڈی والوں سے رابطہ کرتے ہوئے بھاری کمیشن پرگندم فراہم کرنے کا معاہدہ کیا ہے جس کے میڈل مین متحرک ہو گے ہیں اور کاشتکاروں سے ان کے رقبہ سے گندم آٹھا محکمہ خوراک کے سینٹروں پر پہنچا رہے ہیں جبکہ دوسری طرف غلہ منڈی کے سرکردہ افراد نے بھی اپنا کردار ادا کرنے کیلئے میڈان میں آ گے ہیں، غلہ منڈی والوں نے اپنی پرانی گندم جس میں بھاری مقدار میں بھوسہ اور مٹی آٹی ہوئی ہے کو گزشتہ سال کے پرانے تھیلوں سے نکال کر محمکہ خوراک کی جانب سے فراہم کیئے گے باردانہ میں دوباہ پیک کر کے سرکاری گوداموں میں پہنچانا شروع کر دی ہے۔ گندم کی خریداری میں محکمہ خوراک نے اپنی پرانی روش کو نہ چھوڑ سکااور غلہ منڈی کے آڑھتیوں کے ساتھ محکمہ فوڈ کی ملی بھگت کا سلسلہ تبدیلی کے دور میں بھی چل رہاہے، غلہ منڈی کے آڑھتی سرعام پرانی اور ناقص گندم کو پرانے تھیلوں سے نکال کر نئے تھیلوں میں بند کرکے گندم خریداری سینٹر پر عملہ کی ملی بھگت سے سپلائی کررہے ہیں، غلہ منڈی کے تھڑے پر سرعام ناقص گندم کو نئے تھیلوں میں بند کرکے گندم خریداری سینٹر میں بھجوا کر سرکاری کھاتے میں ڈالی جارہی ہے،،، محکمہ فوڈ اور آڑھتیوں کی ملی بھگت اور اس کی روک تھام کے دعوے کرنے والے متعلقہ اداروں نے بھی آنکھیں بند کی ہوئی ہیں۔

انکشاف

مزید :

ملتان صفحہ آخر -