لاک ڈاؤن سے ٹماٹر ٹکے ٹوکری، کاشتکار ”؛لال پیلے“ فصل ضائع کرنے پر غور

  لاک ڈاؤن سے ٹماٹر ٹکے ٹوکری، کاشتکار ”؛لال پیلے“ فصل ضائع کرنے پر غور

  

ملتان(سپیشل رپورٹر)جنوبی پنجاب کے اضلاع اور سندھ کے ضلع میرپورخاص میں لاک ڈاؤن کی صورتحال نے ٹماٹر کے کاشتکاروں کو بھی سخت نقصان پہنچایا ہے، صرف چند ہفتوں کے دوران ٹماٹرکی فصل کے نرخ تیزی سے نیچے آئے ہیں جسے اب کوئی کوڑیوں کے دام بھی لینے کو تیار نہیں ہے۔تفصیلات کے مطابق جنوبی پنجاب کے اضلاع ملتان،مظفر گڑھ لودھراں وہاڑی،خانیوال سمیت سندھ کے ضلع میرپورخاص(بقیہ نمبر13صفحہ6پر)

اور گردونواح میں ٹماٹر کی فصل اب بھی اتر رہی ہے، صرف چند ہفتے قبل 50 روپے فی کلو کے نرخ پر فروخت ہونے والی یہ فصل اب کاشتکار کوڑیوں کے دام فروخت کرنے پر مجبور ہیں۔اس صورتحال میں ایک کاشتکارنے کہاکہ ہم ٹماٹر توڑتے ہیں پھر 10 کلو کا شاپنگ بیگ بناتے ہیں اور وہ منڈی میں 30 روپے کا ایک شاپنگ بیگ فروخت ہوتا ہے یعنی ٹماٹر کی ہمارے پاس سے 3 روپے کلو کی فروخت ہے۔کاشتکار نے بتایا کہ اس قیمت میں ٹرانسپورٹ کا خرچہ پھر کمیشن بھی کٹے گا، اس کے علاوہ کاشتکار جو توڑائی کررہا ہے وہ بھی نہیں بچ رہی ہے۔کاشتکاروں کے مطابق ٹماٹر کی فصل مزید 2 ماہ تک چلے گی، تاہم موجودہ صورتحال سے مایوس بہت سے کاشتکاروں نے اپنی فصل پر ہل چلادیا اور کچھ اب بھی اچھے ریٹ ملنے کی امید لگائے ہوئے ہیں۔کاشتکاروں کا کہنا ہے کہ موجودہ حالات نے نہ صرف ٹماٹر کی فصل مٹی میں ملادی ہے بلکہ آئندہ سیزن کیلئے دیگر فصلوں کا مستقبل بھی انتہائی غیر یقینی ہوگیا ہے۔

ٹماٹر

مزید :

ملتان صفحہ آخر -