بینکوں کی93 فیصد شاخیں آر ٹی او بی خدمات فراہم کر رہی ہیں

بینکوں کی93 فیصد شاخیں آر ٹی او بی خدمات فراہم کر رہی ہیں

اسلام آباد (آن لائن) پاکستان میں بینکوں کی 93 فیصد شاخیں ریئل ٹائم آن لائن بینکنگ کی خدمات فراہم کر رہی ہیں ۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی مالی سال 2012ءکی چوتھی سہ ماہی کے لئے ادائیگی کے نظام سے متعلق سہ ماہی جائزہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ30 جون 2012ء کو ختم ہونے والے مالی سال (مالی سال12ء) کی چوتھی سہ ماہی کے دوران مزید192 بینک برانچوں کو اپ گریڈ کر کے ریئل ٹائم آن لائن برانچز (RTOB) کا درجہ دیا گیا اور اس وقت ملک بھر میں قائم بینکوں کی کل10,017 شاخوں میں سے9,291 یا 92.8 فیصد شاخیں آر ٹی او بی کی خدمات فراہم کر رہی ہیں ۔رپورٹ کے مطابق پاکستان میں ادائیگی کے نظام کے انفرا اسٹرکچر میں مسلسل نمو کا رجحان ہے اور چوتھی سہ ماہی کے دوران مجموعی طور پر 197 آٹومیٹڈ ٹیلر مشینوں (ATMs) کا اضافہ ہوا جس سے ملک میں اے ٹی ایمز کی تعداد بڑھ کر 5,745 تک پہنچ گئی ہے۔ جائزے میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ مالی سال کی چوتھی سہ ماہی میں اے ٹی ایم سودوں کی مالیت اور حجم میں5.9فیصد اور 7.4 فیصد کا اضافہ ہوا اور یہ بڑھ کر بالترتیب438 بلین روپے اور 45 ملین سے زائد تک پہنچ گیا۔ جائزے کے مطابق مجموعی ای بینکاری سودوں میں اے ٹی ایمز کا حصہ بڑھ کر 60.6 فیصد تک پہنچ گیا ہے۔ فی اے ٹی ایم سودے کی اوسط قدر 9,693 روپے رہی اور پوائنٹ آف سیل (PoS) ٹرمنلز کے ذریعے سودوں کا حجم اور مالیت4.7 ملین اور21.49 بلین روپے رہی جو گزشتہ سہ ماہی کے مقابلے میں بالترتیب4.5 فیصد اور 2.1 فیصد زیادہ ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پلاسٹک کارڈز کی تعداد میں بھی گزشتہ سہ ماہی کے مقابلے میں 8.03 فیصد اضافہ ہوا اور چوتھی سہ ماہی کے اختتام پر ملک میں زیر گردش پلاسٹک کارڈز کی تعداد 17.95 ملین ہوگئی۔ چوتھی سہ ماہی کے دوران ای بینکاری کے سودوں کا مجموعی حجم 5.6 فیصد اضافے کے ساتھ 74.6 ملین تک جا پہنچا جبکہ اس سے پچھلی سہ ماہی میں سودوں کا مجموعی حجم 70.6 ملین تھا۔تاہم ریئل ٹائم آن لائن برانچز کے سودوں کی مالیت میں5.4 فیصد کمی کے باعث ای بینکاری کے سودوں کی مجموعی مالیت زیرغور سہ ماہی میں4.4 فیصد کمی کے ساتھ 6.6 ٹریلین روپے ہو گئی جو اس سے پچھلی سہ ماہی میں 6.9 ٹریلین روپے تھی۔ رئیل ٹائم گراس سیٹلمنٹ کے ذریعے بڑی مالیت کی ادائیگیوں کا حجم ایک لاکھ سے زائد اور ان کی مجموعی مالیت28.97 ٹریلین روپے ہو گئی۔ اس طرح گزشتہ سہ ماہی کے مقابلے میں زیرغور سہ ماہی کے دوران اس حجم میں4.8 فیصد اور مالیت میں3.6 فیصد اضافہ ہوا۔ نیز آر ٹی جی ایس سودوں کا بڑا حصہ حسب سابق سیکورٹیز کی سیٹلمنٹ کا (حصہ 53.6 فیصد ) ہے جس کے بعد انٹر بینک فنڈز ٹرانسفر (حصہ34.2 فیصد ) اور ملٹی لیٹرل کلیئرنگ کے ذریعے ریٹیل چیک کی سیٹلمنٹ (حصہ12.1 فیصد ) کا نمبر ہے۔

مزید : کامرس