پری پیڈ سم نہیں ،رحمن ملک پر تاحیات پابندی لگائی جائے، ہیومن رائٹس موومنٹ

پری پیڈ سم نہیں ،رحمن ملک پر تاحیات پابندی لگائی جائے، ہیومن رائٹس موومنٹ

لاہور (جنرل رپورٹر) ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدر محمد ناصر اقبال خان، سیکرٹری جنرل محمد رضا ایڈووکیٹ ،سینئر نائب صدور مہر محمد سلیم، میاں ذوالفقار راٹھور ،میاں ارشد علی، نائب صدور پنجاب شیخ طلال امجد، احد حنیف ،صدر لاہور ایوب چودھری اور نائب صدر مرزا عنایت علی نے کہا کہ پری پیڈ سم نہیں رحمن ملک پر تاحیات پابندی عائد کی جائے، موصوف کو وہ کام دیا گیا جو وہ نہیں کرسکتے۔ رحمن ملک سے وزارت داخلہ کا قلمدان واپس لے کر انہیں وہ کام دیا جائے جس کی ان کے پاس تربیت اور صلاحیت ہو۔ پاکستان کی داخلی خود مختاری ،سالمیت اور دفاعی صلاحیت کے حوالے سے مضحکہ خیز بیانات پر رحمن ملک قابل گرفت ہیں۔ کیا ڈرون حملے پری پیڈ سم کی مدد سے ہوتے ہیں ،کیا شدت پسندوں کا خود کار اسلحہ پری پیڈ سم کی مدد سے گولیاں اگلتا ہے۔ وہ ایک اجلاس سے خطاب کررہے تھے محمد ناصر اقبال خان نے مزید کہا کہ پری پیڈ سم بند ہونے سے دہشت گردی کا باب بند ہو جائیگا رحمن ملک کے پاس اس بات کی کیا ضمانت ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکمران اپنی نااہلی اور ناکامی چھپانے کیلئے عوام کے بنیادی حقوق سلپ نہ کریں۔ موبائل فون اب انسانوں کی اہم ضرورت بن گیا ہے۔ اس بدترین مہنگائی کے دور میں عام آدمی پوسٹ پیڈ سم استعمال نہیں کرسکتا۔ انہوںنے کہا کہ پری پیڈ سم خریدنے کے حوالے سے اگر کوئی سقم یا پیچیدگی موجود ہے تو اسے دور کیا جائے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1