ہر صورت قبائلی علاقے جائیں گے شمالی وزیرستان میں آپریشن سے تباہی آئے گی :عمران خان

ہر صورت قبائلی علاقے جائیں گے شمالی وزیرستان میں آپریشن سے تباہی آئے گی ...

اسلام آباد(ثناءنیوز ) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ شمالی وزیرستان ایجنسی میں آپریشن سے تباہی آئے گی ۔ قبائلی عمائدین نے اپنے تحفظات سے آگاہ کر دیا ہے کاروائی سے گریز کیا جائے۔ پشاور سے شمالی وزیرستان تک امن مارچ میں ایک لاکھ افراد شریک ہوں گے ۔ ہر صورت قبائلی علاقے جائیں گے ۔ انہوں نے حالیہ ڈرون حملوں کی بھرپور مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت شہریوں کے جان و مال کے تحفظ میں ناکام ہو چکی ہے۔ پوری قوم یہ چاہتی ہے کہ ڈرون حملوں اور فوجی آپریشن کے خلاف امن مارچ کیا جائے۔ وزیرستان جانے کی تاریخ اور راستے کا حتمی فیصلہ تحریک انصاف کی کمیٹی اور وزےرستان کی لےڈر شپ کرے گی ۔ سول سوسائٹی ¾ عالمی میڈیا سمیت ایک لاکھ افراد کا قافلہ وزیرستان مارچ میں شریک ہو گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پارٹی کے مرکزی سیکرٹریٹ میں قبائلی عمائدین سے ملاقات کے بعد ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ملک قادر خان ¾ ملک نصراللہ خان ¾ ملک شیرین ¾ ملک قیوم ¾ رستم شاہ مہمند ¾ خالد محسود ¾ روئیداد خان ¾ شاہ فرمان ¾ نعیم الحق ¾ احمد جواد، عاطف خان اور دیگر رہنما بھی موجود تھے۔ قبل ازیں اجلاس میں وزیرستان کے قبائلی عمائدین نے ڈرون حملوں اور فوجی آپریشن کے حوالے سے تحریک انصاف کے موقف کی بھرپور تائید کی۔ عمران خان نے مزید کہا کہ فوجی آپریشن مسئلے کا حل نہیں۔ شمالی وزیرستان میں آپریشن سے خطے میں مزید تباہی پھیلے گی ۔ انہوں نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 4 میں واضح ہے کہ شہریوں کے جان و مال کی حفاظت حکومت کی اولین ذمہ داری ہے۔ ڈرون حملوں سے عام شہری مارے جا رہے ہیں جس کے اثرات پورے ملک میں ظاہر ہوتے ہیں۔ وزیرستان کی جانب سونامی مارچ کا مقصد میڈیا کو وہاں کے مقامی لوگوں سے ملوانا ہے تا کہ پوری دنیا ان کے حالات اپنی آنکھ سے دیکھ سکے۔ ان کا کہنا تھا کہ کوئی بھی جنگ مقامی لوگوں کی حمایت کے بغیر جیتنا ممکن نہیں ہے۔ عمران خان نے کہا کہ جمہوری حکومت کے دعویدار فوجی آپریشن کے حوالے سے قبائلی عمائدین سے مشاورت کر کے قومی اسمبلی میں بحث کروائیں۔

مزید : صفحہ اول