اردو کے معروف غزل گو شاعراحمد فراز کی چوتھی برسی منائی گئی

اردو کے معروف غزل گو شاعراحمد فراز کی چوتھی برسی منائی گئی

لاہور( این این آئی) اردو کے معروف غزل گو شاعراحمد فراز کی گزشتہ روز چوتھی برسی منائی گئی ۔ احمد فراز کو موجودہ دور کا سب سے مقبول غزل گو اور رومان پرورشاعر ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔1931ءمیں پیدا ہونیوالے فرازکا پہلا مجموعہ تنہاتنہا کے نام سے شائع ہوا۔اس وقت فراز گریجویشن کررہے تھے۔پہلے ہی مجموعے نے انہیں شہرت کی بلندیوں پر پہنچادیا۔دوسرے مجموعے درد آشوب ،پرانہیں پاکستان رائٹرز گلڈز کی جانب سے آدم جی ادبی ایوارڈ دیا گیا۔فراز کا کلام علی گڑھ یونیورسٹی اور پشاور یونیورسٹی کے نصاب میں شامل ہے۔ جامعہ ملیہ، بھارت اور بہاولپور میں بھی احمد فراز کے فن اور شاعری پر پی ایچ ڈی کے مقالے تحریر کئے گئے۔ ان کی شاعری کے انگریزی ،فرانسیسی ہندی،یوگوسلاوی، روسی، جرمن اور پنجابی میں تراجم ہو چکے ہیں۔2004ءمیں پرویز مشرف کے دورِ صدارت میں انہیں ہلالِ امتیاز سے نوازا گیا لیکن دو برس بعد انہوں نے یہ تمغہ سرکاری پالیسیوں پر احتجاج کرتے ہوئے واپس کر دیا۔25اگست 2008ءکو آسمان غزل کا یہ ستارہ سب کو اداس چھوڑگیا۔

مزید : صفحہ آخر