پیپلز پارٹی نے آئین کو اصلی شکل میں بحال کیا، تیسری مرتبہ وزیراعظم بننے پر پابندی کا خاتمہ جمہوریت کا ثمر ہے: خورشید شاہ

پیپلز پارٹی نے آئین کو اصلی شکل میں بحال کیا، تیسری مرتبہ وزیراعظم بننے پر ...
پیپلز پارٹی نے آئین کو اصلی شکل میں بحال کیا، تیسری مرتبہ وزیراعظم بننے پر پابندی کا خاتمہ جمہوریت کا ثمر ہے: خورشید شاہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ سیاستدان ایک دوسرے کی سازشوں کا شکار بنتے رہے، تیسری مرتبہ وزیراعظم بننے پر پابندی کا خاتمہ جمہوریت کا ثمر ہے۔ قومی اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سید خورشید شاہ نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف ہر محاذ پر حکومت کے ساتھ ہیں، مذاکرات ہوں یا طاقت کا استعمال، ہر محاذ پر حکومت کا ساتھ دیں گے۔ دہشت گردی کے خاتمے کیلئے عوام کا حوصلہ بڑھانا ہو گا۔ قومی اسمبلی اور پارلیمینٹ کے مشترکہ اجلاس سے صدارتی خطاب پر بحث کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ آمر صدر نے 2002ءسے 2007ءتک پارلیمینٹ سے خطاب نہیں کیا تھا،2008ءمیں جمہوری حکومت آئی تو ملک میں آمر کا قانون موجود تھا اور تاریخ میں پہلی بار صدر نے آزاد پارلیمینٹ سے خطاب کیا جس میں انہوں نے آئین کو اصلی شکل میں بحال کرنے کا وعدہ کیا اور اپنا وعدہ پورا کیا۔ انہوں نے کہا کہ آئین کی بحالی کے باعث نواز شریف تیسری بار وزیراعظم بنے۔ 2008ءمیں نواز شریف پارلیمینٹ کی گیلری میں بیٹھے تھے جبکہ آج وہ ملک کے وزیراعظم ہیں، یہ جمہوریت کی فتح ہے۔ انہوں نے حکومت سے آئینی عدالت اور کارگل کمیشن کا بھی مطالبہ کیا۔ خو رشید شاہ نے کہا کہ آئی ایم ایف سے قرض لے کر حکومت نے ہمیں حیران کر دیا ہے، پیپلز پارٹی حکومت پر آئی ایم ایف سے قرض لینے پر تنقید کی گئی جبکہ موجودہ حکومت خود کشکول لے کر آئی ایم ایف کے پاس چلی گئی، حکومت ملک کو قرض کی دلدل میں نہ ڈالے بلکہ ترقی کی راہ پر چلائے۔