کلاروس اور کیرن میں جھڑپیں، 4 عسکرےت پسند اور 2فوجی اہلکار مارے گئے

کلاروس اور کیرن میں جھڑپیں، 4 عسکرےت پسند اور 2فوجی اہلکار مارے گئے

جموں (کے پی آئی) شمالی کشمیر سرحدی ضلع کپوارہ کے کلاروس اور کیرن سیکٹر وںمیں دو الگ الگ جھڑپوں کے دوران 4 عسکرےت پسند اور 2فوجی اہلکار مارے گئے جبکہ ایک فوجی اہلکار شدید طور زخمی ہوا۔ پولیس حکام کے مطا بق دراندازی کے دوران مژھل سیکٹر سے 22اور23اگست کی درمیانی رات 6سے 8 مجاہدین پر مشتمل ایک گروپ سرحد کے اس پار داخل ہو نے میں کا میاب ہوا ،جس کے بعد مذکورہ مجاہدین نے زیڈ گلی کو عبور کر کے سرکلی کلاروس کے جنگلی علاقہ میں پناہ لی۔ 41 آر آر، 14 آر آر اور 53 گرینیڈرس سے وابستہ اہلکاروں نے مشترکہ طور ایک مصدقہ اطلاع ملنے پر سر کلی جنگلات کا محاصرہ کیا جس کے دوران وہا ں چھپے بیٹھے مجاہدین نے فوج پر فائرنگ کی جس کے جواب میں فوج نے بھی جوابی کارروائی کی۔ فوج اور مجاہدین کے درمیان خون ریز جھڑپ ہوئی۔

 جو کئی گھنٹوں تک جاری رہی۔ جھڑپ کے دوران 53 گرینیڈرس سے وابستہ نائیک نیرج کمار شدید طور پر زخمی ہوا جسے نازک حالت میں سرینگر منتقل کیا گیا۔ جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اس جھڑپ میں اب تک 4مجاہد جا ں بحق ہوئے اور فوج کا ایک اور اہلکار زخمی ہوا ۔آخری اطلاعات ملنے تک جھڑپ جاری تھی۔ ادھرفوج نے کیرن سیکٹر کے جنگلات کے ایک وسیع علاقے کو سنیچر کو گھیرے میں لیا اور مجاہدین کے فرار ہونے کے تمام راستو ں کو بند کیاگیا۔ اس دوران کیرن کے جنگلاتی علاقے میں تلاشی آپریشن کے دوران اتوار کی صبح فوج کی پارٹی پر مجاہدین نے گھات لگاکر حملہ کیا۔ اس آپریشن میں 23 گرینیڈرس اور پولیس کا سپیشل آپریشن گروپ کارروائی کر رہا تھا۔ بلبیر پوسٹ کے نزدیک گھنے جنگل میں مجاہدین نے فوج پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں راہل کمار نامی اہلکار شدید زخمی ہوا جو بعد میں زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا جبکہ مجاہد فرار ہونے میں کامیاب ہوئے۔ فوج نے اتوار کی شام تک علاقہ کو محاصر میں لیکر وسیع تلاشی کا روائیوں کا سلسلہ شروع کیا ہے۔ واضع رہے رواں مہینے میں کرناہ ،کیرن اور کلاروس علاقوں میں یہ 7ویں جھڑپ ہے اور اب تک 13مجاہدین سمیت 15افراد مارے گئے ہیں جن میں دو فوجی اہلکار بھی شامل ہیں ۔

مزید : عالمی منظر