لیبیا‘اسلامی ملیشیا کا طرابلس پر کنٹرول کا دعویٰ

لیبیا‘اسلامی ملیشیا کا طرابلس پر کنٹرول کا دعویٰ

طرابلس(آن لائن)لیبیا کی اسلامی ملیشیاو¿ں پر مشتمل فجرلیبیا نے حکومت نواز ملیشیا کے ساتھ ایک ماہ کی لڑائی کے بعد دارالحکومت طرابلس اور اس کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر قبضے کا دعویٰ کیا ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق فجر لیبیا نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس نے طرابلس میں دوسرے مقامات اور جگہوں پر بھی قبضہ کر لیا ہے اور وہاں سے متحارب جنگجو گروپوں کو نکال باہر کیا ہے۔ پارلیمان کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ''فجر لیبیا اور انصارالشریعہ کے نام سے کام کرنے والے گروپ دہشت گرد ہیں اور یہ حکومت کی عمل داری کے خلاف کام کررہے ہیں''۔

پارلیمان نے اپنی مسلح افواج کے ذریعے ان جنگجو گروپوں سے نمٹنے کا اعلان کیا ہے۔اس اعلان کے چند گھنٹے کے بعد ہی مصراتہ سے تعلق رکھنے والے جنگجوو¿ں نے ہوائی اڈے پر قبضہ کرنے کی اطلاع دی تھی اور اتوار کو نامعلوم جنگی طیاروں نے ہوائی اڈے پر بمباری کی تھی۔طرابلس کے مکینوں نے علی الصباح جیٹ طیاروں کی پروازوں کے بعد دھماکوں کی آوازیں سنی تھیں۔اس کے علاوہ کوئی اور تفصیل دستیاب نہیں ہوئی ہے۔ بعض اطلاعات کے مطابق دوسرے بڑی شہر بن غازی سے تعلق رکھنے والے باغی جنرل خلیفہ حفتر کے جنگی طیاروں نے اسلامی جنگجوو¿ں پر فضائی بمباری کی ہے۔

مزید : عالمی منظر