سمیع الحق سے لیاقت بلوچ کی ملاقات ، ملک کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال

سمیع الحق سے لیاقت بلوچ کی ملاقات ، ملک کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال


لاہور(سٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی اور جے یو آئی (س) نے اس امر پر اتفاق کیا ہے کہ کوئی بھی غیر آئینی اقدام ملک کیلئے تباہ کن ثابت ہوسکتا ہے،اسلام آباد میں ہونے والے سیاسی دھرنوں کو غیر شائستہ ناچ گانوں کا مرکز بنا کر نئی نسل کو بگاڑ اور اخلاقی بے راہ روی پر لگا دیا گیا ہے سیاسی اور جمہوری کلچر میں مخالف پر تنقید کرنے کے بھی کچھ آداب ہوتے ہیں لیکن اسلام آباد دھرنوں میں دینی اور سیاسی قائدین کے خلاف جو غیر مہذب زبان استعمال کی جارہی ہے وہ انتہائی افسوسناک ہے ،ملک کی تمام سیاسی قوتوں کو موجودہ بحران حل کرنے کیلئے اپنا کردار ادا کرتے رہنا چاہئے کیونکہ کوئی غیر آئینی اقدام ملک کو شدید خطرات سے دوچار کرسکتا ہے ،آئین ،پارلیمنٹ اور جمہوریت کا دفاع ہم سب پر فرض ہے جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے پیر کے روز اکوڑہ خٹک میں جے یو آئی (س)کے سربراہ مولانا سمیع الحق سے ملک کی موجودہ صورتحال پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا ملاقات کے دوران جماعت اسلامی کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل فرید احمد پراچہ ،جے یو آئی س کے صوبائی امیر مولانا سید یوسف شاہ اور جماعت اسلامی ضلع نوشہرہ کے امیر معراج الدین خان بھی موجود تھے ،دونوں رہنماؤں نے اس امر پر تشویش کا اظہار کیا کہ اسلام آباد دھرنوں کی وجہ سے شمالی وزیر ستان آپریشن کے نتیجے میں بے گھر ہونے والے لاکھوں افراد کودرپیش مشکلات اور مسائل پس منظر میں چلے گئے ہیں دونوں رہنماؤں نے مطالبہ کیا کہ شمالی وزیر ستان کے لاکھوں بے گھر افراد کے مسائل کی طرف مرکزی اور صوبائی حکومت بھرپور توجہ دے اور انہیں بے یارو مدد گار نہ چھوڑا جائے ،رہنماؤں نے اس امر پر بھی اتفاق کیا کہ کہا جارہا ہے کہ شمالی وزیرستان کا بڑا حصہ کلیئر کرالیا گیا ہے تو پھر ہونا تو یہ چاہئے تھا کہ جو علاقے کلیئر کرالئے گئے ہیں تو وہاں کے بے گھر افراد کو فوری باعزت طور پر واپس انکے گھروں کو بھیج دیا جائے ۔

ملاقات

مزید : صفحہ آخر