چیئرپرسن یوتھ لون سکیم کا عہدہ وزیر اعظم کا صوابدیدی اختیار ہے،لاہور ہائیکورٹ

چیئرپرسن یوتھ لون سکیم کا عہدہ وزیر اعظم کا صوابدیدی اختیار ہے،لاہور ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس محمد امیر بھٹی نے قرار دیا ہے کہ بادی النظر میں چیئرپرسن یوتھ لون سکیم کا عہدہ سیاسی عہدہ ہے، جس کیلئے کوئی قواعد و ضوابط واضح نہیں ہیں، یہ وزیر اعظم کا صوابدیدی اختیار ہے۔فاضل جج نے وزیر اعظم کی صاحبزادی مریم نواز کی بطور چیئرپرسن یوتھ لون سکیم تعیناتی کے خلاف درخواست میں نوٹس جاری کرنے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے فائل چیف جسٹس کو واپس بھجوا دی تاکہ اس درخواست کو بھی سماعت کے لئے مسٹر جسٹس اعجاز الاحسن کی عدالت میں بھجوا یا جاسکے جو اسی نوعیت کی ایک دوسری درخواست کی پہلے سے سماعت کررہے ہیں۔مسٹر جسٹس محمدامیر بھٹی نے تحریک انصاف کے زبیر نیازی ایڈووکیٹ کی درخواست پر سماعت شروع کی تو انکے وکیل شیراز ذکاء نے عدالت کو بتایا کہ وزیر اعظم کی صاحبزادی مریم نواز کو غیرشفاف طریقے سے یوتھ لون سکیم کا چیئرپرسن لگایا گیا ہے اس اسامی کا کوئی اشتہار بھی نہیں دیا گیا،عدالت نے استفسار کیا کہ سپریم کورٹ کے دونوں فیصلے تو سرکاری ملازمین سے متعلق ہیں لیکن مریم نواز تو سرکاری ملازم نہیں ہیں، اس نکتے پر آپ کیا کہیں گے جس پر وکیل نے کہا کہ چیئرپرسن یوتھ لون سکیم کی تعیناتی بھی انہیں فیصلوں کے روشنی میں ہونی چاہیے ، عدالت نے قرار دیا کہ چیئرپرسن یوتھ لون سکیم کا عہدہ سیاسی عہدہ ہے، جس کیلئے کوئی قواعد و ضوابط واضح نہیں ہیں، یہ وزیر اعظم کا صوابدیدی اختیار ہے ۔عدالت نے نوٹس جاری کرنے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے درخواست جسٹس اعجاز الاحسن کے روبرو سماعت کیلئے پیش کرنے کیلئے فائل واپس چیف جسٹس کو بھجوا دی ۔

صوابدیدی اختیار

مزید : صفحہ آخر