چلی کے تین طلباءنے چوری سے محفوظ سائیکل تیار کرلی

چلی کے تین طلباءنے چوری سے محفوظ سائیکل تیار کرلی
چلی کے تین طلباءنے چوری سے محفوظ سائیکل تیار کرلی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

سینٹیاگو(مانیٹرنگ ڈیسک) چوروں کا نشانہ بننے والے چلی کے تین طلباءنے چوری سے محفوظ سائیکل تیار کرلی۔ ہر سیکنڈ میں کہیں نہ کہیں ایک سائیکل چوری ہوتی ہے اور محفوظ سائیکل کے موجد طلباءنے اپنی سواریوں سے ہاتھ دھونے کے بعد عملی اقدام کیا۔ چوری سے محفوظ یہ سائیکل بناوٹ کے لحاظ سے کسی بھی دوسری سائیکل سے زیادہ منفرد نہیں لیکن اِس کا صرف ایک ڈنڈا الگ ہوجاتاہے اور وہی ’لاک ‘کا کام کرتاہے جسے کسی بھی مناسب موٹائی کے درخت یا کھمبے وغیرہ کے ساتھ باندھا جاسکتاہے۔ نچلی طرف کے راڈ نما ڈنڈے کے ساتھ تالے کا نظام لگایاگیاہے اورا±س میں سائیکل کی کھل جانیوالی ’کاٹھی‘ معاون ہوتی ہے۔ اس سائیکل کو چرانے کے لیے توڑنا پڑے گا اور توڑ پھوڑ کا واقعہ کم ہی رونما ہوتاہے۔سائیکل بنانے والے طلباءکا کہناتھاکہ لاک لگی سائیکل کا صرف ٹائر اور کاٹھی ہی چوری ہوسکتے ہیں جو پوری سائیکل سے ہاتھ دھونے کی نسبت کم نقصان وہ ہے۔

مزید : صفحہ آخر