وزارت خزانہ اور ایف بی آر کی ٹیم سوئس بنکوں سے 200ارب ڈالر کی واپسی کیلئے جنیوا پہنچ گئی

وزارت خزانہ اور ایف بی آر کی ٹیم سوئس بنکوں سے 200ارب ڈالر کی واپسی کیلئے جنیوا ...

                             جنیوا (آئی این پی) وزارت خزانہ اور فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے حکام کی ٹیم سوئٹزر لینڈ کے بنکوں میں پاکستانیوں کی طرف سے کرپشن ‘ لوٹ مار اور دیگر ذرائع سے حاصل کرکے جمع کرائے گئے 200ارب ڈالر سے زائد کی واپسی کے لئے پیر کو جنیوا پہنچ گئی۔ پاکستان اور سوئٹزر لینڈ کے حکام کے درمیان دوہرے ٹیکسوں سے بچاﺅ کے معاہدے میں ترامیم اور پاکستانیوں کے سوئس بنکوں میں موجود اکاﺅنٹس کے بارے میں باضابطہ مذاکرات (آج) منگل سے شروع ہوں گے۔ ذرائع کے مطابق پاکستان اور سوئٹزر لینڈ کے درمیان دوہرے ٹیکسوں سے بچاﺅ کے معاہدے میں ایسی ترامیم شامل کرنے کے بارے میں بات چیت ہوگی جس کے تحت پاکستانی حکام سوئس بنکوں میں موجود پاکستانیوں کی دولت بارے معلومات حاصل کرسکیں گے۔ ذرائع کے مطابق پاکستان اور سوئٹزر لینڈ کے درمیان اس حوالے سے بات چیت کئی روز تک جاری رہنے کا امکان ہے۔ ذرائع کا یہ بھی دعویٰ ہے کہ سوئس حکام کی طرف سے بعض مثبت یقین دہانیاں ملنے کے بعد پاکستانی وفد سوئٹزر لینڈ گیا ہے۔ یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ پاکستان اور سوئٹزر لینڈ تنظیم برائے اقتصادی تعاون و ترقی کے ممبران ہیں اور سوئٹزر لینڈ اس تنظیم کے ممبر ممالک کے ساتھ سوئس بنکوں میں فرضی اور بے نام اکاﺅنٹس میں پڑی دولت بارے معلومات کا تبادلہ کرتا ہے اور اسی لئے (او ای سی ڈی) کی سفارش پر سوئٹزر لینڈ نے تنظیم کے رکن ممالک کو لوٹ مار کرکے سوئس بنکوں میں جمع کرائی گئی رقوم کی واپسی کے لئے خصوصی قانون بھی متعارف کروایا تھا۔ اس قانون کے تحت سوئٹزر لینڈ کے جن ممالک کے ساتھ دوہرے ٹیکسوں سے بچاﺅ کے معاہدے ہیں ان معاہدوں میں معلومات کے تبادلے کی شق شامل کرکے ان ممالک کو اس کے شہریوں کی طرف سے لوٹ مار کرکے سوئس بنکوں میں جمع کرائی گئی رقوم بارے معلومات کی فراہمی کو لازمی قرار دیا گیا۔۔ ذرائع کا دعویٰ ہے کہ ایک محتاط اندازے کے مطابق سوئس بنکوں میں پاکستانیوں کے کرپشن اور لوٹ مار سے جمع کرائے گئے 200ارب ڈالر سے زائد موجود ہیں اور اگر پاکستان ان میں سے آدھے بھی حاصل کرنے میں کامیاب ہوجاتا ہے تو وہ اپنے تمام غیر ملکی قرضے ادا کرنے کے ساتھ ساتھ ایک بہت بڑی رقم عوام کی فلاح و بہبود اور ملکی ترقی پر بھی خرچ کرسکے گا۔

مزید : علاقائی