نوازشریف کی موجودگی میں دھاندلی کی شفاف تحقیقات نہیں ہوسکتی،عمران خان

نوازشریف کی موجودگی میں دھاندلی کی شفاف تحقیقات نہیں ہوسکتی،عمران خان
نوازشریف کی موجودگی میں دھاندلی کی شفاف تحقیقات نہیں ہوسکتی،عمران خان

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کہتے ہیں کہ ہم چاہتے ہیں انتخابی دھاندلی کی تحقیقات ہو لیکن نوازشریف کی موجودگی میں دھاندلی کی شفاف تحقیقات نہیں ہوسکتی۔بھارتی چینل این ڈی ٹی وی کو انٹرویو کے دوران تحریک انصاف کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ 11 مئی 2013 ءکو ہونے والے عام انتخابات میں دھاندلی کے تمام ریکارڈ توڑے گئے۔ جمہوریت صاف اور شفاف انتخابات سے ہی آتی ہے، دنیا بھر کے آمر انتخابات کراتے ہیں لیکن اس سے ملک میں جمہوریت نہیں آتی۔ ہم چاہتے ہیں انتخابی دھاندلی کی تحقیقات ہو اور اس میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی کی جائے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ اس سلسلے میں ہماری جدوجہد کو 14 ماہ ہوگئے اور 2 ہزار ایک سو صفحات پرمشتمل وائٹ پیپر جاری کیا، نوازشریف کی موجودگی میں دھاندلی کی شفاف تحقیقات نہیں ہوسکتی،وہ مستعفی ہوجائیں اور تحقیقات تک مسلم لیگ ن میں سے کسی دوسرے شخص کو وزیراعظم بنایا جائے۔عمران خان کا کہنا ہے کہ سابق ایڈیشنل سیکریٹری الیکشن کمیشن افضل خان کے بیان کے بعد نوازشریف اخلاقی جواز کھوچکے ہیں۔ جمہوری ملکوں میں اس قسم کے بیانات کے بعد سپریم کورٹ نئے انتخابات کا اعلان کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عدالت نے شاہراہ دستور کو خالی کرانے کا حکم دیا ہے، ہم شاہراہ دستورپرنہیں ہیں لہذا عدالتی حکم ہم پرنافذ نہیں ہوتا۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں