پی پی پنجاب کے ارکان انتقامی کارروائیوں کے خلاف پھٹ پڑے

پی پی پنجاب کے ارکان انتقامی کارروائیوں کے خلاف پھٹ پڑے
پی پی پنجاب کے ارکان انتقامی کارروائیوں کے خلاف پھٹ پڑے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کراچی (ویب ڈیسک) پیپلزپارٹی کے سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس میں پنجاب کے اراکین مرکزی اور صوبائی حکومت کی انتقامی کارروائیوں کے خلاف پھٹ پڑے اور مرکزی قیادت پر زور دیا کہ ن لیگی حکومت کی کسی بھی سطح پر حمایت نہ کی جائے۔ پارٹی ذرائع کے مطابق اجلاس بلاول ہاﺅس میں چھ گھنٹے جاری رہا جس میں پنجاب سے تعلق رکھنے والے اراکین نے اس بات پر ناراضی کا اظہار کیا کہ پیپلزپارٹی مسلم لیگ ن کی حمایت میں حد سے تجاوز کررہی ہے جس سے نہ صرف پارٹی کی ساکھ متاثر ہورہی ہے بلکہ پارٹی کے اندری بھی اختلافات بڑھتے جارہے ہیں۔انکا کہنا تھا کہ حکومت بدترین انتقامی کارروائیاں جاری رکھے ہوئے ہیں اسلئے اب حکومت کی حمایت مکمل طور پر ترک کردینی چاہیے۔ الیکشن کمیشن کے سابق ایڈیشنل سیکرٹری افضل خان کی طرف سے دھاندلی کے انکشافات پر کمیٹی میں کہا گیا کہ یہ الزامات ثابت کرنا اگرچہ مشکل کام ہے مگر اس کی تحقیقات شروع ہونی چاہیے۔ جب پیپلزپارٹی کے حکومت مکیں شامل ہونے یا نہ ہونے کا معاملہ سامنے آیا تو بعض اراکین نے کہا اس ایشو پر مزید بہت سوچنے کی ضرورت ہے۔ آصف زرداری نے کہا سیاست آپ لوگوں نے کرنی ہے میں نے صرف گائیڈ کرنا ہے جو کررہا ہوں۔

مزید : کراچی