تین ہزار سال بعد مایائی تہذیب کے دو شہروں کی دریافت

تین ہزار سال بعد مایائی تہذیب کے دو شہروں کی دریافت
 تین ہزار سال بعد مایائی تہذیب کے دو شہروں کی دریافت

  

لندن(نیوزڈیسک) ماہرین آثار قدیمہ نے جنوب مشرقی میکسیکو کے جنگل میں چھپے ہوئے قدیم مایا تہذیب کے دو شہر دریافت کر لئے ہیں ان ماہرین کا کہنا ہے کہ اس علاقے میں ابھی درجنوں شہر ہیں جو دریافت ہونے باقی ہیں۔

ریسرچ سنٹر آف سلووینئین اکیڈمی آف سائنس اینڈ آرٹ کے ایسوسی ایٹ پروفیسر نے بتایا ہے کہ ان کی ٹیم نے مایا تہذیب کے یہ قدیم شہر اپریل میں دریافت کئے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ انہوں نے اس دریافت کی ابتداءعلاقے کی چند ائرئیل فوٹو گراف سے کی تھی۔انہوں نے مزید بتایا کہ یہ دو شہر 600سے 1000سال عیسوی قبل اپنے عروج پر تھے۔ان شہروں کے ہر اطراف میں محققین کو مختلف مقامات مثلاً عمارتیں، اہرام اور پلازوں کے شواہد ملے ہیں اور ہراہرام تقریباً20میٹر یعنی 65فٹ اونچا ہے۔علاوہ ازیں ماہرین کو جنگل میں ایک بڑے داخلی دروازے جسے شہر میں داخل ہونے کے لئے استعمال کیا جاتا تھا کے نشانات بھی ملے ہیں۔ایسوسی ایٹ پروفیسر نے بتایا ہے کہ ہماری ٹیم نے اس شہر کا نقشہ تقریباً 25سے 30ایکڑ رقبے پر تیار کیا ہے لیکن یہ دونوں شہر اس رقبے سے زیادہ فاصلے پر پھیلے ہوئے ہیں۔ان علاقوں میں درجنوں ایسے شہر ہیں جنہیں ہم نے ائیریل فوٹو گراف کے ذریعے دیکھا ہے جن کو دریافت کرنے کے لئے ہمیں مزید فنڈنگ کی ضرورت ہوگی۔ پچھلے سال ہم نے قدیم مایان تہذیب کا ایک اور شہر بھی دریافت کیا تھا جو 10کلومیٹر شمال Lagunitaاور کلومیٹر Tamachenکے جنوب مغرب میں واقع ہے۔مایا ایمپائر ایک ناقابل یقین اور انتہائی نفیس تہذیب تھی جو Tropical Lowlandsپر واقع تھی جسے اب Guatemalaکے نام سے جانا جاتا ہے۔مایا تہذیب Mesomerica میکسیکو اور وسطی امریکہ کی ایک غالب اور دستوری سوسائٹیوں پر مبنی تھی اور بعدازاں سپین نے ان پر فتح حاصل کرلی تھی۔

مزید : رئیل سٹیٹ