خبردار!آپ کا فون آپ کو ”مروا“ بھی سکتا ہے

خبردار!آپ کا فون آپ کو ”مروا“ بھی سکتا ہے
خبردار!آپ کا فون آپ کو ”مروا“ بھی سکتا ہے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن(نیوزڈیسک)حکومتوں کی طرف سے عوام کی جاسوسی انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا اہم موضوع بن چکا ہے لیکن ایسے تمام اعتراضات کو بالائے طاق رکھتے ہوئے ایسا نظام واضع کر لیا گیا ہے جس سے حکومتیں اور خفیہ ایجنسیاں موبائل فون رکھنے والے ہر شخص کی ہر وقت نگرانی کرتے ہوئے معلوم کر سکیں گی کہ وہ کہاں ہے اور کہاں کہاں گیا ہے۔اس نظام میں موبائل فون ٹیکنالوجی کی اس بنیادی خاصیت کو استعمال کیا گیا ہے کہ موبائل فون کمپنیوں کے پاس ہر موبائل فون کا لمحے لمحے کا ریکارڈ ہوتا ہے۔کسی بھی نمبر پر کال یا دوسری خدمات فراہم کرنے کے لئے کمپنیاں ہر وقت یہ معلومات دیکھتی ہیں کہ وہ کس جگہ موجود ہیں۔

اگرچہ امریکی نیشنل سکیورٹی ایجنسی(NSA) اور برطانوی GCHQجیسے ادارے تو پہلے ہی اس قسم کے نظام استعمال کر رہے ہیں لیکن یہ پہلا موقع ہے کہ اس قسم کی تفصیلی اور گہری جاسوسی کی صلاحیت ہر ملک اور ہر خفیہ ایجنسی کو دستیاب ہو جائیگی۔صارفین کی جگہ کا پتہ چلانے کے لئےموبائل سویچنگ سینٹر کو استعمال کیا جائیگا جو اپنے دائرے میں موجود ہر صارف کی جگہ کا ریکارڈ رکھتا ہے۔ اب صارفین کی ایک جگہ سے دوسری جگہ حرکت کا بھی باقاعدہ ریکارڈ رکھا جائے گا اور خفیہ ایجنسیاں اسےاستعمال بھی کر سکیں گی۔ اگرچہ ابھی یہ واضح نہیں کہ کتنے ملکوں نے یہ ٹیکنالوجی حاصل کر لی ہے لیکن سیکیورٹی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ حال ہی میں درجنوں ممالک نے یہ جاسوسی نظام حاصل کر لیا ہے۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی