آج آخری مذاکرات ہوں گے، افتخار چودھری نے براہ راست دھاندلی کی، روزانہ نئے انکشافات ہو رہے ہیں: عمران خان

آج آخری مذاکرات ہوں گے، افتخار چودھری نے براہ راست دھاندلی کی، روزانہ نئے ...
آج آخری مذاکرات ہوں گے، افتخار چودھری نے براہ راست دھاندلی کی، روزانہ نئے انکشافات ہو رہے ہیں: عمران خان

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ ہمارامقصد بہت بڑا ہے، پاکستانی عوام کو آزادی دلائیں گے اور نواز شریف کے استعفے تک یہاں سے نہیں اٹھیں گے، آج آخری مذاکرات ہوں گے، اس کے بعد آئیندہ لائحہ عمل طے کریں گے, آئے روز دھاندلی سے متعلق نئے نئے انکشافات سامنے آرہے ہیں ، عدلیہ بھی دھاندلی کے الزامات کا نوٹس لے۔

آزادی مارچ کے دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ جیسے جیسے اس ملک میں نواز شریف کی بادشاہت کا اثر زائل ہو رہا ہے روزانہ نئے نئے انکشافات سامنے آ رہے ہیں۔اختر مینگل نے سامنے آکر بلوچستان میں ہونے والی دھاندلی کو بے نقاب کر دیا ہے، ہم اس پر ان کا شکریہ ادا کرتے ہیں، دوسری جانب الیکشن کمیشن کے اہلکار جسٹس رضوی نے بھی افضل خان کی جانب سے لگائے گئے الزامات کی تصدیق کر کے یہ حقیقت عیاں کر دی ہے کہ انتخابات میں بد ترین دھاندلی ہوئی تھی۔ عمران خان نے ایک بار پھر نجی نیوز چینل جیو نیوز کے مالک میر شکیل الرحمان کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ یہ انسان پاکستان کے خلاف کام کرتا رہا ہے اور آج بھی پیسے کا پجاری ہے، افضل خان نے دھاندلی کی تصدیق کی تو جیو کی جانب سے ا نکی کردار کشی شروع کر دی گئی، کیونکہ یہ ادارہ خود دھاندلی میں ملوث تھا اور ان کو ڈر ہے کہ اگر تحقیقات ہو گئیں تو یہ بھی پھنس جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری نے دھاندلی میں بد ترین کردار ادا کیااور اس کی تصدیق تو جسٹس کیانی نے بھی کر دی ہے، جنہوں نے کہا ہے کہ افتخار چوہدری نے ریٹرنگ آفیسرز کو اپنے ماتحت رکھا۔سابق وزیر شہزادہ اشرف نے کہا ہے کہ وزارت کی میٹنگ کے منٹس میں یہ بات موجود ہے کہ نجم سیٹھی اور افتخار چودھری پوری طرح دھاندلی میں ملوث تھے۔ اسی طرح سچ سامنے آتا جا رہا ہے ، میں مبارکباد دیتا ہوں کہ نادرا کے سابق چیئرمین طارق ملک بھی سامنے آنے والے ہیں جو کہ بتائیں گے کہ ان کو ان کے عہدے سے کیوں ہٹایا گیا تھا۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان کا کمپیوٹر سسٹم ایک سازش کے تحت بند کیا گیا تا کہ نتائج کو تبدیل کیا جا سکے، اس کے بعد وہ تمام لوگ جو دھاندلی میں ملوث تھے ان کو نوازا گیا اور اہم عہدوں ہر تعینات کر دیا گیا، اس لئے ہم کہتے ہیں کہ میاں نواز شریف کے مستعفی ہونے تک انصاف ملناممکن ہی نہیںاور تم جب تک استعفیٰ نہیں دو گے ہم دھرنے سے نہیں اٹھیں گے۔

عمران خان نے وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اس ملک کا نظام کبھی طاقتور کو نہیں پکڑ سکا ، اسی لئے آج جب لاہور ہائیکورٹ نے شہباز شریف کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا تو دوسری جانب وہ چین میں موجود ہیں۔ اسی طرح گوجرانوالہ میں پومی بٹ نے جب میرے کنٹینر پر حملہ کیا تو ایک گولی ساتھ اپنے گھر میں کام کرنے والی ’شیراں بی بی‘کو لگی، جس کا آج انتقال ہو گیا ہے، ہم اس کے قتل کی ایف آئی آر بھی پومی بٹ کے خلاف درج کروائیں گے۔سول نافرمانی کی تحریک سے متعلق انہوں نے کہا کہ پاکستان کی قومی اسمبلی تو پہلے ہی ٹیکس چوری کر رہی ہے اور سول نافرمانی پر ہے، میں آج تاجروں سے کہتا ہوں کہ وہ اس حکومت کو ٹیکس دینے بند کر دیں اور عوام بھی یوٹیلٹی بلز کی ادائیگی سے انکار کر دیں۔ انہوں نے کہا کہ ہماری تحریک صرف دھاندلی کے خلاف نہیں ہے بلکہ ہمارا مقصد بہت بڑا ہے، ہم نے پاکستانیوں کو آزادی دلانی ہے اور ان کی طاقت ان کو واپس دلانی ہے۔ہم یہاں ٹونٹی ٹونٹی نہیں بلکہ ٹیسٹ میچ کھیلنے آئے ہیں۔ میرا اس کنٹینر میں ورزش نہ ہونے کی وجہ سے گزارہ مشکل ہو رہا تھا مگر اب میری جاگنگ مشین بھی آ گئی ہے اس لئے اس مشکل کا حل بھی نکل آیا ہے۔میں پاکستانیوں کو کہتا ہوں کہ قرآن کو ترجمے کے ساتھ ضرور پڑھیں اور پاکستان بنانے کے مقاصد سے آگاہی کے لئے علامہ اقبال کا فلسفہ پڑھیں۔

مزید : قومی /Headlines